تفتیشی عمل کو جدید بنانے کے لئے ترقی یافتہ ممالک کیساتھ پراجیکٹس پر کام جاری ہے ،آئی جی پنجاب

تفتیشی عمل کو جدید بنانے کے لئے ترقی یافتہ ممالک کیساتھ پراجیکٹس پر کام جاری ...

 لاہور)وقائع نگارخصوصی)۔ پنجاب پولیس میں تفتیشی عمل کو جدید تقاضوں سے ہم آہنگ کرنے اورجرائم کی بروقت تفتیش کے لئے ترقی یافتہ ممالک کے تجربات اور ٹیکنیک سے مستفید ہونے کے لئے ان ملکوں کے ماہرین کے ساتھ مختلف پراجیکٹس پر کام جاری ہے۔ جس کابنیادی مقصد پنجاب پولیس کو دہشت گردوں اور دیگر مجرموں تک پہنچنے کے لئے تربیت فراہم کرنا ہے۔ان خیالات کا اظہار انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب، مشتاق احمد سکھیرا نے آج سنٹر پولیس آفس لاہور میں دو مختلف غیر ملکی وفود سے ملاقات کے دوران کیا۔پہلا وفدUnited Nations Office of Drug and Crime (UNODC)4ممبران پر مشتمل تھا ۔ جن کا تعلق ناروے اور Switzerlandکے پولیس کالجز سے تھا۔وفد میں Dag Storikenاسسٹنٹ چیف آف پولیس، Tor Tanke Hotmڈپٹی ڈائریکٹر پولیس، Sir Hansen Thokle،ہیڈ آف ڈیپارٹمنٹ اور Mark Downesہیڈ آف انٹرنیشنل سیکیورٹی سیکٹر شامل تھے۔آئی جی پنجاب نے وفد کے تعاون سے گجرات میں شروع کیے جانے والے پہلے جدید ترین کرائم سین یونٹ کے لئے ماڈرن سہولیات سے آراستہFirst Respondant Kitاور دیگر Infrastructureکی فراہمی کے لئے شکریہ ادا کرتے ہوئے توقع ظاہر کی کہ اگلے کرائم سین یونٹ جو بالترتیب سیالکوٹ اور گوجرانوالہ میں لگائے جا رہے ہیں اس کے لئے بھی وفد کا تعاون جاری رہے گا۔وفد نے آئی جی پنجاب کو اس سے قبل سہالہ، روات اور دیگر پولیس ٹریننگ سنٹرز کے ساتھ ساتھ مختلف دیگر سرکاری محکموں کے دوروں کے علاوہ ریٹائرڈ پولیس آفیسرز کے ساتھ ملاقاتوں کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ وہ ان تمام دوروں کی روشنی میں پنجاب پولیس کی Capacity Buildingاور Stratagic Planningکے علاوہ ٹریننگ سکولوں میں پڑھائے جانے والے Curicullam کے بارے میں مزید تجاویز دیں گے تا کہ پنجاب پولیس کو ان کے تجربات سے مستفید کیا جا سکے۔ دریں اثناء جرمن فیڈرل کریمنل پولیس آفس کے لائزون پولیس آفیسر، Klaus Weberنے بھی آئی جی پنجاب سے ملاقات کی صوبائی پولیس سربراہ نے جرمن پولیس آفیسر کو لاہور میں قائم Forensic Labکے بارے میں تفصیلات سے آگاہ کرتے ہوئے بتایا کہ کس طرح اس لیب سے انوسٹی گیشن کو بہتر کیا جارہا ہے ۔ اس موقع پر جرمن پولیس آفیسر نے آئی جی پنجاب کو جرمنی میں پولیس کی ورکنگ، HR اورپولیس بجٹ کے بارے میں تفصیلات سے آگاہ کیا ۔ اس کے علاوہ انہوں نے آئی جی پنجاب کو جرمنی میں جرائم سے نمٹنے اور تفتیشی عمل اور پولیس افسروں کی تربیتی طریقہ کار کے بارے میں بھی آگاہ کیا۔

مزید : علاقائی