43بچے ظالم سیاستدان جوڑےکی خواہش کے بھینٹ چڑھ گئے

43بچے ظالم سیاستدان جوڑےکی خواہش کے بھینٹ چڑھ گئے
43بچے ظالم سیاستدان جوڑےکی خواہش کے بھینٹ چڑھ گئے

  

میکسیکو سٹی (نیوز ڈیسک) میکسیکو میں ایک شہر کے میئر کی بیوی نے اپنی پارٹی میں ممکنہ خلل ڈالنے والے 43 طلباءکو غنڈوں کے ہاتھوں بدترین تشددکا نشانہ بنوایا اور بعد میں ان میں سے اکثر کو زندہ جلا دیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق یہ خوفناک واقعہ میکسیکو کی ریاست گریرو میں پیش آیا جہاں ایگوالا شہر کے سابق میئر اوزے عبارکہ کی بیوی ماریہ پنیڈا نے پولیس سے کہا تھا کہ وہ طلباءکو اسکی پارٹی میں ہلڑ بازی سے باز رکھیں۔ اٹارنی جنرل حسوس موریلو کے مطابق پولیس نے 43 طلباءکو گرفتار کیا اور تشدد کے بعد ایک مقامی گینگ کے حوالے کردیا جنہوں نے طلباءکو مزید تشدد کا نشانہ بنانے کے بعد زندہ جلا دیا۔ میئر کی بیوی کے بارے میں یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ وہ مقامی انڈرورلڈ کی سرغنہ ہیں۔ اٹارنی جنرل نے مزید بتایا کہ طلباءکا میئر کی بیوی کی پارٹی یا اس کی تقریب میں گڑ بڑ کا قطعاً کوئی ارادہ نہیں تھا بلکہ وہ بسوں میں سوار ہوکر 1968ءمیں قتل کئے گئے طلباءکی یادگار میں منعقد کی جانے والی تقریب میں شرکت کیلئے جارہے تھے۔

پولیس کی طرف سے معاملے کی مزید تحقیقات جاری ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس