بجلی کے شارٹ فال میں اضافہ سے بدترین لوڈ شیڈنگ عوام کیلئے عذاب ہے ، ناصر رمضان

بجلی کے شارٹ فال میں اضافہ سے بدترین لوڈ شیڈنگ عوام کیلئے عذاب ہے ، ناصر ...

  

لاہور(پ ر)پاکستان مسلم لیگ لاہور کے سیکرٹری اطلاعات ناصر رمضان گجر نے ہائیڈل اور تھرمل پیداور میں کمی کی وجہ سے شارٹ فال میں اضافہ سے15گھنٹے تک کی لوڈ شیڈنگ پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ بجلی کے شارٹ فال میں اضافہ سے بدترین لوڈ شیڈنگ عوام کے لیے عذاب ہے لوڈ شیڈنگ کے باعث صنعتی اداروں کی بندش سے مزدور بے روزگار و صنعتکار پریشانی کا شکار ہیں ۔انہوں نے وزیراعظم کی جانب سے2018میں لوڈ شیڈنگ کے خاتمہ کے اعلان پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ 2018میں توانائی بحران کے خاتمہ کا وعدہ بھی الیکشن سے قبل 6ماہ میں لوڈ شیڈنگ کے خاتمہ کے وعدے کی طرح کبھی ایفا نہیں ہوگا کیونکہ انٹرنیشنل انرجی کمیشن کی پاکستان کے متعلق رپورٹ کے مطابق توانائی بحران کا خاتمہ آئندہ سالوں میں میں بھی پور ا ہونا ممکن نہیں کیونکہ آنے والی سالوں میں بجلی کی طلب میں مزید اضافہ ہوتا چلاجائے گی جبکہ پیداوار میں اضافہ طلب میں اضافہ کی نسبت انتہائی کم ہے یہی وجہ ہے کہ ملک میں بدترین لوڈ شیڈنگ کا دور دورہ ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے مسلم لیگ ہاؤس میں مسلم لیگ لاہور کے کارکنوں کے ایک اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ناصر رمضان گجر نے کہا کہ لوڈ شیڈنگ کے مستقل خاتمہ کے لیے کالا باغ ڈیم کی تعمیر ناگزیر ہے انہوں نے کہا کہ سیاسی اختلاف رائے جمہوری رویہ ہے لیکن ملکی و عوامی مفاد کے منصوبوں کو سیاسی اختلاف رائے کی نذر کرنا کسی بھی طور پر درست نہیں ہے ۔انہوں نے کہا کہ امپورٹڈبجلی حکومت اور عوام استعمال کرنے کی مزید سکت نہیں رکھتے ،بجلی اتنی مہنگی ہوچکی ہے کہ بجلی کے بل دیکھ کر عوام ڈپریشن کا شکار ہوجاتے ہیں جبکہ کالا باغ ڈیم سے ، کالا باغ ڈیم ہوتا تو قومی معیشت قومے میں نہ ہوتی اور پاکستان کو آئی ایم ایف جیسے اداروں کے سامنے قرض کے حصول کیلئے ہاتھ نہ پھیلانے پڑتے ۔انہوں نے کہا کہ کالا باغ ڈیم بنائے بغیر سستی بجلی حاصل نہیں ہوگی توانائی کے بحران کے خاتمے کیلئے کالا باغ ڈیم ہی اکسیر نسخہ ہے۔کالا باغ ڈیم سیاست کی نذر ہونے سے ہر برس 560 ارب کا نقصان ہو رہا ہے ۔یہ پاکستان کی بقاء کا مسئلہ ہے ،کالا باغ ڈیم آج شروع ہو تو 4 سال میں مکمل ہو جائے گا ، ڈیڑھ روپے فی یونٹ والی 4 ہزار میگا واٹ بجلی سسٹم میں آجائے گی ،تھرمل بجلی پر انحصار کم نہ کیا تو یہ بدبختی ہوگی ۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -