ز لزلہ متاثرین کو ہمدردانہ بیانات نہیں مطلوبہ سہولیات کی ضرورت ہے،حافظ عاکف

ز لزلہ متاثرین کو ہمدردانہ بیانات نہیں مطلوبہ سہولیات کی ضرورت ہے،حافظ عاکف

  

لاہور(نمائندہ خصوصی)انجمن طلبہ اسلام کے مرکزی صدر محمد عاکف طاہر نے کہا ہے کہ ز لزلہ متاثرین کو ہمدردانہ بیانات نہیں مطلوبہ سہولیات کی ضرورت ہے۔ جمہوریت کو گھر کی باندی بنانے والے آمروں سے بھی بدتر ہیں۔ سٹیٹس کو کے حامی پاکستان کی ترقی میں رکاوٹ ہیں۔قوم طالبان کے بعد داعش سے بھی لڑنے کے لیے تیار ہے۔ حکومت داعش کے فتنے کو کچلنے کے لیے مجرمانہ غفلت کا مظاہرہ نہ کرے۔ ظلم کے خلاف لڑنے والوں کے لیے واقعۂ کربلا مشعل راہ ہے۔ انقلابِ نظام مصطفی کے لیے اہل حق کی شیرازہ بندی ضروری ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے پنجاب بھر سے آئے ہوئے عاملہ کے ممبران کے اعلی سطحی وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔عاکف طاہر نے مزید کہا آج تک پاکستان میں عدل اجتماعی قائم کرنے کی مؤثر کوشش نہیں کی گئی۔ موجودہ حکمران غریبوں اور امیروں میں غیرمعمولی عدم مساوات کو ختم کرنے کے جذبے اور صلاحیت سے عاری ہیں۔ حکومت نے عوام پر 1382 ارب کے بالواسطہ ٹیکسوں کا بوجھ ڈال دیا ہے۔ انہوں نے کہا بھارت میں اقلیتوں کو بد ترین صورتحال کا سامنا ہے۔زلزلہ متاثرین کو ہمدردانہ بیانات نہیں مظلوم سہولیات کی ضرورت ہے۔حکمران عوام دوست پالیسیاں اختیارکریں۔ چیف جسٹس کا سینیٹ سے خطاب اداروں کے درمیان ہم آہنگی کا اظہار ہے۔

تعلیم اور صحت کے شعبوں میں اصطلاحات کی ضرورت ہے۔ بھارتی حکمران پست ذہنیت کا مظاہرہ کررہے ہیں ۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -