مرضی کے خلاف شادی کرنے والا جوڑا تحفظ کے لیے سیشن عدالت پہنچ گیا

مرضی کے خلاف شادی کرنے والا جوڑا تحفظ کے لیے سیشن عدالت پہنچ گیا

  

لاہور(نامہ نگار)والدین کی مرضی کے خلاف شادی کرنے والا جوڑا تحفظ کے لیے سیشن عدالت پہنچ گیا۔عدالت نے جوڑے کو تحفط فراہم کرنے کے لیے مزنگ پولیس کو حکم جاری کردیا۔ایڈیشنل سیشن جج مظہرسلیم رامے کی عدالت میں مزنگ کی مریم اور اقبال ٹاؤن کے فواد اپنے وکیل مہرشکیل احمد ایڈووکیٹ کے ہمراہ پیش ہوئے۔ مہرشکیل احمد ایڈووکیٹ نے عدالت سے استدعا کی کہ پسند کی شادی کرنے والے جوڑے کے والدین ان کی جان کے در پے ہیں، ان کو مزنگ پولیس کی مدد سے ہراساں کرایا جارہا ہے۔

اگر ان کو تحفط فراہم نہ کیا گیا تو ان کی جان کو خطرہ ہے۔ عدالت میں مریم اور فواد نے بتایا کہ وہ بالغ ہیں اور انھوں نے اپنی مرضی سے شادی کی ہے لیکن والدین ان کی شادی کو قبول نہیں کررہے اور پولیس کی مدد سے ان کو ہراساں کیا جا رہا ہے۔ عدالت نے دونوں کے بیان اور وکیل کے دلائل کے بعد مزنگ پولیس کو انھیں ہراساں کرنے سے روک دیا۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -