سانحہ سندر ، 19افراد کے ملبے تلے موجود ہونے کی اطلاعات پر لواحقین نے پاس ہی ڈیرے ڈال دئے

سانحہ سندر ، 19افراد کے ملبے تلے موجود ہونے کی اطلاعات پر لواحقین نے پاس ہی ...

لاہور(شعیب بھٹی ) سندر فیکٹری حادثے میں 19 افراد کے اب بھی ملبے تلے موجود پائے جانے کی اطلاعات پر لواحقین کی نگاہیں آسمان پر اورہاتھ اوپر اٹھے رہے ،اپنے پیاروں کی زندگی کے لئے کسی معجزے کے منتظر سینکڑوں افراد نے ملبے کے پاس ہی ڈیرے ڈا ل دئے ، جائے حادثہ پر تعفن پھیلنے لگاجبکہ انتظامیہ مبینہ طورپر ہلاکتوں کی تعداد چھپانے لگی ہے ۔ ڈی سی او لاہور نے تعداد 40قرار دیدی جبکہ میڈیا دن بھر 48چلاتا رہا۔ ریسکیوکا عمل چوتھے روز بھی مکمل نہ ہوسکا۔تفصیلات کے مطابق سندر انڈسٹریل اسٹیٹ میں بدھ کی شام پلاسٹک کے بیگ بنانے والی ایک فیکٹری اچانک زمین بوس ہوگئی۔ جس کے نتیجے میں غیر مصدقہ اطاعات کے مطابق گزشتہ روز شام تک فیکٹری کے مالک سمیت مجموعی طورپر 48افراد جاں بحق ہوئے اور ایک سو پانچ افراد کی جانیں بچالی گئیں البتہ ڈی سی او لاہور نے 40افراد کی ہلاکتوں کی تصدیق کی ہے۔میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ فیکٹری حادثے میں 40افراد ہی جاں بحق ہوئے ہیں اور میڈیا پر چلنے والی 48کی تعداد غلط ہے۔ انہوں نے مزید بتا یاکہ فیکٹری کا ملبہ مکمل کلئیر کرنے کے لیے ریسکیو ٹیموں کو مزید تین دن کا وقت درکار ہوگا۔اطلاعات ہیں کہ فیکٹری کے ملبے تلے اب بھی 19افراد کے زندہ یا مردہ دبے پائے جانے کی اطلاعات ہیں اور ان کے لواحقین نے فیکٹری کے ملبے کے پاس ہی ڈیرے ڈال رکھے ہیں۔ان کے ہاتھ اوپر اٹھے ہیں،نظریں آسمان پر ہیں اور زبان پر اپنے پیاروں کی زندگی کے لیے دعائیں ہیں۔آنکھوں میں آنسو لئے یہ لوگ ملبے تلے دبے اپنے عزیزوں کے زندہ ہونے کے لیے معجزے کے منتظر ہیں۔دوسری طرف جائے حادثہ پر تعفن پھیلنے لگا ہے جس سے ریسکیوٹیموں کو مشکلات کا سامنا ہے۔

مزید : علاقائی