سندھ حکومت صوبے کو خانہ جنگی کی جانب دھکیل رہی ہے، پیرپگار

سندھ حکومت صوبے کو خانہ جنگی کی جانب دھکیل رہی ہے، پیرپگار

  

 کراچی (اسٹاف رپورٹر) حروں کے روحانی پیشوا اور مسلم لیگ فنکشنل کے سربراہ پیر صبغت اللہ شاہ راشدی پیر پگارا نے کہا ہے کہ سندھ حکومت دھونس، دھمکی اور دھاندلی کے ذریعے بلدیاتی الیکشن جیتناچاہتی ہے اور اس مقصدکے لئے وہ سندھ کو خانہ جنگی کی جانب دھکیل رہی ہے، بلدیاتی الیکشن کے اگلے دو مرحلوں میں اگر فوج اور رینجرز نے امن و مان بر قرار رکھنے کے لئے مداخلت نہ کی تو پی پی پھر دوبارہ خون خرابے کرانے کی کوشش کرے گی۔ وہ ہفتہ کے روز حر جماعت کے مرکز کنگری ہاؤس میں جماعت کے خلفاء، عمائدین اور سانحہء خیرپور کے دوران جاں بحق ہونے والے افراد کے ورثاء سے خطاب کررہے تھے۔ مسلم لیگ فنکشنل اور حر جماعت کے زرائع نے بتایا ہے کہ پیر پگارا نے حر جماعت کے اس غیرمعمولی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم قانون ہاتھ میں لینے والے لوگ نہیں بلکہ قانون کا احترام کرنے والے پیں تاہم شریعت کے مطابق آنکھ کے بدلے آنکھ اورخون کے بدلے خون ہے۔زرائع کے مطابق پیر پگارا نے کہا کہ ان کی جماعت نے الیکشن سے پہلے ہی الیکشن کمیشن اور انتظامیہ کو ان پولنگ اسٹیشنوں کے بارے میں بتادیا تھا جہاں گڑ بڑ ہوسکتی ہے لیکن ہماری کسی بات پر توجہ نہیں دی گئی اورسندھ حکومت کے کہنے پر غیرحساس پولنگ اسٹیشنوں کو حساس پولنگ اسٹیشن قرار دے دیا گیا۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ اللہ کو حاضر و ناظر جان کر غیر جانبدارانہ تحقیقات کرائیں تو انہیں خود پتہ چل جائے گا کہ پیپلز پارٹی کے کون کون سے لیڈر سانحہ خیرپور میں ملوث تھے۔ انہوں نے جماعت کے خلیفاؤں اور معززین کو آگا ہ کیا کہ انہیں یہ اطلاع بھی ملی ہے کہ جونیجو اور مری برادریوں کے جرائم پیشہ افراد کو حکمراں جماعت کی جانب سے اسلحہ اور ہتھیار فراہم کئے جارہے ہیں تاکہ 19نومبر کو بلدیاتی الیکشن میں پھر دھاندلی کی جاسکے اور پی پی کا کوئی مخالف اس کی مخالفت کی ہمت نہ کرسکے انہوں نے کہا کہ اگر فوج اور رینجرز نے صورتحال کو نوٹس نہ لیا تو پھر گڑ بڑ کا خطرہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ خیرپور کے لوگوں کو اچھی طرح علم ہے کہ الیکشن سے پہلے پولنگ اسٹیشنوں اور اس کے قریبی گھروں کی چھتوں پر کس نے مورچے قائم کرائے تھے۔ وزیر اعلیٰ سندھ اس واقعہ کی اگر غیر جانبدارنہ تحقیقات چاہتے ہیں تو وہ اپنے اختیارات استعمال کرتے ہوئے تحقیقاتی عمل میں کسی اور کو مداخلت نہ کرنے دیں۔ اجلاس کے بعد پیر پگارا نے حر جماعت کے خلفاء کے ساتھ بند کمرے میں آئندہ کے لائحہ عمل کے حوالے سے اہم مشاورت کی۔ اجلاس میں حر جماعت کے تمام خلیفہ اور جماعت کے معززین نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ اس موقع پر حر جماعت کے سربراہ نے سانحہ خیرپور کے دوران جاں بحق ہونے والے افراد کے ورثاء کو صبر وتحمل سے کام لینے کی تلقین کی اور انہیں یقین دلایا کہ انہیں تنہا نہیں چھوڑا جائے گا۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -