ذوالفقار مرزا ذہنی طور پر مفلوج ہوگئے ہیں،سید ناصر شاہ

ذوالفقار مرزا ذہنی طور پر مفلوج ہوگئے ہیں،سید ناصر شاہ

کراچی (اسٹاف رپورٹر) وزیر بلدیات سندھ سید ناصر حسین شاہ نے کہا ہے کہ سندھ میں بلدیاتی انتخابات کے پہلے مرحلے کی طرح دوسرے اور تیسرے مرحلے میں بھی عوام پیپلز پارٹی کو بھرپور اکثریت میں کامیابی سے ہمکنار کریں گے۔ سابق وزیر داخلہ ذوالفقار مرزا بوکھلاہٹ کا شکار ہوچکا ہے اور وہ ذہنی طور پر مفلوج ہوگیا ہے۔ پیپلز پارٹی کی مدمقابل سیاسی جماعتیں بائیکاٹ کے بہانے تلاش کررہی ہیں لیکن ہم انہیں میدان سے کسی صورت بھاگنے کا موقع نہیں دیں گے۔ کراچی میں کلین سٹی مہم کا آغاز کیا جارہا ہے اور اس کو شفاف بنانے کے لئے سول سوسائٹی، سیاسی جماعتوں، رینجرز و پولیس اور میڈیا پر مشتمل کمیٹیا تشکیل دی جارہی ہیں، جو تمام کاموں کی مکمل مانیٹرنگ کریں گی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ہفتہ کو کراچی انسٹی ٹیوٹ آف ہارٹ ڈیزیز کے پرائیوٹ ونگ کے افتتاح کے موقع پر منعقدہ تقریب سے خطاب اور بعد ازاں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔ وزیربلدیات سندھ نے کہا کہ ہم نے کے ایم سی کے تمام اسپتالوں پر مکمل فوکس کیا ہوا ہے اور کچھ فنڈز کی کمی کے باعث مسائل کا سامنا ہے اور اس کو جلد سے جلد دور کیا جارہا ہے جبکہ ماضی میں ہونے والی کرپشن کے باعث بھی ادویات اور دیگر کی خریداری پر عدالتوں میں کچھ اسٹے آرڈر کا سامنا ہے اور اس کے تدارک کے لئے وکلاء کی ٹیموں کو کام سونپ دئیے گئے ہیں۔ ایک سوال کے جواب میں سید ناصر حسین شاہ نے کہا کہ ہم پر دھاندلی کے الزامات لگانے والے عوام کو بتائیں کہ سندھ کے بلدیاتی انتخابات میں 1070 نشستوں میں سے ان کے کتنے امیدواروں نے مقابلہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کسی بھی سیاسی جماعت کے 200 سے زائد لوگ انتخابات میں حصہ نہیں لیا تو وہ اب کسی منہ سے دھاندلی کی بات کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جس طرح انتخابات کے پہلے مرحلے میں عوام نے پیپلز پارٹی کو جس بھاری اکثریت سے کامیاب کیا ہے آئندہ ہونے والے دوسرے اور تیسرے مرحلے میں بھی عوام پیپلز پارٹی کے امیدواروں پر مکمل اعتماد کا اظہار کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ سانحہ خیرپور کے اصل حقائق بھی وزیر اعلیٰ سندھ کی جانب سے بنائی جانے والی اعلیٰ سطحی عدالتی تحقیقاتی ٹیم کی تحقیقات کے بعد سامنے آجائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ کس سیاسی جماعت نے اپنے دوسرے ڈسٹرکٹ کے کارکنوں کو کس لئے دوسرے ڈسٹرکٹ میں بلوایا اور ان کا کیا مقصد تھا، یہ بھی عوام کے سامنے آجائے گا۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ذوالفقار مرزا مکمل طور پر بوکھلاہٹ کا شکار ہوگیا ہے اور وہ ذہنی طور پر مفلوج ہوکر کبھی مولا جٹ تو کبھی نوری نتھ بن رہا ہے لیکن حقیقت یہ ہے کہ وہ ذہنی طور پر اب مکمل مفلوج ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر ذوالفقار مرزا کے لئے پیپلز پارٹی اتنی ہی خراب ہے تو وہ اپنی بیوی اور بیٹے کو جو آج بھی پیپلز پارٹی کی ٹکٹ پر کامیاب ہوکر رکن قومی اور سندھ اسمبلی ہیں، ان کو استعفیٰ دلوائیں اور دوبارہ انتخابات لڑوائیں۔ انہوں نے کہا کہ بدین میں ہونے والے بلدیاتی انتخابات کے نتائج کے بعد ذوالفقار مرزا کا ذہنی فتور بھی ختم ہوجائے گا۔ ایک اور سوال کے جواب میں سید ناصر حسین شاہ نے کہا کہ الیکشن کمشنر کی تعیناتی کا اختیارات صوبائی حکومت کے پاس نہیں ہے۔ ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ انتخابات کے دوسرے مرحلے کے لئے سیکورٹی انتظامات کو حتمی شکل دے دی گئی ہے اور پیر کے روز سے جن جن اضلاع میں انتخابات ہونے ہیں وہاں پولیس، رینجرز اور پاک فوج کی پیٹرولنگ کا عمل شروع ہوجائے گا جبکہ دوسرے مرحلے میں تمام پولنگ اسٹیشنوں پر دو رینجرز اور 8 پولیس کے اہلکار تعینات کئے جائیں گے جبکہ حساس اور انتہاہی حساس پولنگ اسٹیشنوں پر فوج کی تعیناتی کے لئے بھی سندھ حکومت نے الیکشن کمیشن کو خط لکھ دیا ہے۔ ایک اور سوال کے جواب میں سید ناصر حسین شاہ نے کہا کہ بوکھلاہٹ کا شکار کچھ سیاسی جماعتیں اس انتخابات کے بائیکاٹ کی رہ تلاش کررہی ہیں لیکن ہم انہیں بھاگنے کا کوئی موقع فراہم نہیں کریں گے۔ ہم نے ان کے مطالبے پر فوج کی تعیناتی اور سانحہ خیرپور کی اعلیٰ عدالتی تحقیقات کا پہلے سے ہی اعلان کردیا ہے اور ہم کسی صورت انہیں ان انتخابات کا بائیکاٹ نہیں کرنے دیں گے۔ ایک اور سوال پر صوبائی وزیر بلدیات نے کہا کہ کے ایم سی اور ڈی ایم سیز کے پاس صفائی کے لئے اتنے وسائل نہیں ہیں کہ وہ مکمل طور پر صفائی کرسکیں، اسی لئے ہم نے سولڈ ویسٹ مینجمنٹ کے منصوبے کے تحت کلین سٹی مہم کا آغاز کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور اس کے بعد سولڈ ویسٹ مینجمنٹ 2016 سے مکمل طور پر صفائی کے کاموں کو سرانجام دے گی۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر