ترکمانستان نے تاپی منصوبے پر کام شروع کر دیا

ترکمانستان نے تاپی منصوبے پر کام شروع کر دیا
ترکمانستان نے تاپی منصوبے پر کام شروع کر دیا

  

اشک آباد(ویب ڈیسک) ترکمانستان نے تاپی منصوبے پر کام شروع کر دیا، صدرگلی بردی محمد نے ترکمانستان سے بھارت ، پاکستان اور افغانستان تک گیس پہنچانے کیلئے پائپ لائن کی تعمیر شروع کرنے کے احکام جاری کر دئیے ، سرکاری میڈیا کے مطابق ترکمانستان کے صدر نے ریاستی کمپنیوں ترکان گیس اور ترکمان گیس نیفٹسٹوری کو اپنے حصے کی گیس پائپ لائن تعمیر کرنے کے احکامات دیدیئے۔ مجموعی طورپر یہ پائپ لائن 1800 کلو میٹر رقبے پر بچھائی جائیگی اور ممکنہ طور پر اسکی تعمیر پر 10ارب ڈالر ز سے زیادہ کا خرچہ آئیگا، ترکمانستان حکومت کو توقع ہے کہ سالانہ 33 ارب کیو بک میٹرگیس کی فراہمی کیلئے پائپ لائن 2018 کے آخر تک مکمل طورپر آپرریشنل ہو جائیگی، تاپی منصوبے سے ایشیاءکی بڑی طاقتور انڈیا اور پاکستان کو توانائی کی کمی پر قابو پانے میں مدد ملے گی تاہم اس مہنگے منصوبے پر غیریقینی کے بادل بھی چھائے ہوئے ہیں، جنگ زدہ افغانستان میں پائپ لائن سے متعلق خطرات کے ساتھ ساتھ 4 ملکی کنسورشیم اب تک کسی غیر ملکی کمر شل شراکت دار کی شرکت کی تصدیق نہیں کرسکا جو مالی طورپر مدد کرسکے، سیاسی طورپر بھی یہ منصوبہ پچیدہ ہے جس کیلئے تعاون کرنیوالی حکومتوں کو ضرورت ہے جبکہ لاجسٹک اعتبار سے بھی یہ چیلنج ہے کیونکہ پائپ لائن کو پاکستان اور افغانستان کے ایسے علاقوں سے گزرنا ہو گا جہاں طالبان اور علیحدگی پسند عسکریت پسند موجود ہیں۔

مزید :

بزنس -