سعودی عرب میں ماہرین نے ایسا اعلان کردیا کہ ملک میں مقیم اور وہاں جانےع کے خواہشمند غیر ملکیوں کو خوش کردیا

سعودی عرب میں ماہرین نے ایسا اعلان کردیا کہ ملک میں مقیم اور وہاں جانےع کے ...
سعودی عرب میں ماہرین نے ایسا اعلان کردیا کہ ملک میں مقیم اور وہاں جانےع کے خواہشمند غیر ملکیوں کو خوش کردیا

  

ریاض(مانیٹرنگ ڈیسک) سعودی عرب میں لاکھوں کی تعداد میں غیرملکی افراد روزگار کے سلسلے میں موجود ہیں اور اس میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے۔ ماہرین اقتصادیات نے اب اس کی وجہ بھی بیان کر دی ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ غیرملکی ورکرز سعودی باشندوں کی نسبت نوکریوں کے لیے زیادہ موزوں ہوتے ہیں اور سعودی جاب مارکیٹ کے تقاضوں پر پورے اترتے ہیں۔ماہر اقتصادیات احسان بحالیقا کا کہنا ہے کہ سعودی جاب مارکیٹ اس قدر وسیع ہے کہ وہ ہر سعودی شہری کو نوکری دے سکتی ہے جو نوکری کرنا چاہتا ہے۔ تاہم سعودی باشندوں میں بیروزگاری کی وجہ یہ ہے کہ وہ جاب مارکیٹ کے تقاضوں پر پورے نہیں اترتے۔

احسان بحالیقا کا کہنا ہے کہ سعودی جاب مارکیٹ کو اس وقت مختلف شعبوں میں 5لاکھ ماہرین، 6لاکھ عارضی ورکرز اور 12لاکھ قابل ملازمین کی ضرورت ہے۔ اس وقت ان تمام آسامیوں پر زیادہ تر غیرملکی تعینات ہیں۔فنی تربیت کے اداروں سے فارغ التحصیل ہونے والے تقریباً93فیصد سعودی اس وقت برسرروزگار ہیں۔انہوں نے بتایا کہ 2014ءمیں غیرملکی مزدوروں پر 140ارب ریال(تقریباً3کھرب 93ارب روپے)خرچ کیے گئے۔ سعودی وزراءکونسل نے ایک کمیشن بنانے کا فیصلہ کیا ہے جو سعودی باشندوں میں بیروزگاری کے مسئلے سے نمٹے گا اور فنی تربیت کے اداروں کو پابند کرے گا کہ وہ اپنے طلباءکو مارکیٹ کے تقاضوں کے مطابق تعلیم دیں۔

مزید :

بین الاقوامی -