مسلم ملک میں اداکارہ نے ایسی فلم بنا ڈالی کہ لوگوں نے سرعام تشدد کا نشانہ بنا دیا

مسلم ملک میں اداکارہ نے ایسی فلم بنا ڈالی کہ لوگوں نے سرعام تشدد کا نشانہ بنا ...
مسلم ملک میں اداکارہ نے ایسی فلم بنا ڈالی کہ لوگوں نے سرعام تشدد کا نشانہ بنا دیا

  

کاسابلانکا(نیوز ڈیسک) مراکش میں جسم فروشی کے موضوع پر فلمائی جانے والی ایک دستاویزی فلم کی ہیروئن کو گزشتہ ہفتے شہر کاسابلانکا میں بدترین تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔ ’ لبنہ ابدار ‘ نامی اداکارہ نے فلم میں ایک جسم فروش خاتون کا کردار ادا کیا ہے ۔ فلم میں اس دھندے میں کاصر کرنے والی خواتین کی زندگی اور مشکلات کو موضوح بنایا گیا ہے تاہم جب انٹرنیٹ پر ٹریلر جاری کیا گیا تو عوام کی جانب سے اسے بے حد تنقید کا نشانہ بنایا گیا جس کے بعد حکومت نے اس پر پابندی لگا دی۔ اب اداکارہ کی جانب سے سوشل میڈیا پر ایک ویڈیوجاری کی گئی ہے جس میں ان کے چہرے اور جسم پر زخموں کے نشانات دیکھے جاسکتے ہیں۔ اس ویڈیو میں انہوں نے دعویٰ کیا ہے کہ لوگوں کی جانب سے انہیں تشدد کا نشانہ بنایا گیا جس کے بعد متعدد ڈاکٹروں نے علاج سے بھی انکار کر دیا اور پولیس نے بھی مدد نہ کی۔ تاہم حملہ آوروں کے متعلق زیادہ تفصیلات فراہم نہ کیں۔ اس ویڈیو میں اداکارہ نے فرانس میں سیاسی پناہ لینے کی خواہش بھی ظاہر کی جس پر بہت سے لوگوں نے تنقید کرتے ہوئے سارے معاملے کو ڈرامہ قراردیا ۔ تاہم اداکارہ کا کہنا ہے کہ اس وقت وہ بے حد گبھرائی ہوئی تھی جس وجہ سے ایسی باتیں کہہ دیں، وہ اپنے ملک میں ہی رہنا چاہتی ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -