امریکی لڑکی کے ساتھ انٹرنیٹ پر عشق لڑاکر مشہور ہونے والا یہ سعودی نوجوان تو آپ کو یاد ہوگا لیکن اب اس کی ایک ایسی چیز سامنے آگئی کہ سعودی عرب میں ایک بار پھر ہنگامہ برپاہوگیا

امریکی لڑکی کے ساتھ انٹرنیٹ پر عشق لڑاکر مشہور ہونے والا یہ سعودی نوجوان تو ...
امریکی لڑکی کے ساتھ انٹرنیٹ پر عشق لڑاکر مشہور ہونے والا یہ سعودی نوجوان تو آپ کو یاد ہوگا لیکن اب اس کی ایک ایسی چیز سامنے آگئی کہ سعودی عرب میں ایک بار پھر ہنگامہ برپاہوگیا

  



ریاض (مانیٹرنگ ڈیسک) مدینہ چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کی تقریب میں ا یک ایسے نوجوان کی شمولیت کی افواہ سامنے آگئی کہ سوشل میڈیا پر ہنگامہ برپا ہوگیا اور چیمبر کو اپنی ساکھ بچانے کے لئے باقاعدہ طور پر وضاحت جاری کرنا پڑی کہ یہ خبر بالکل جھوٹی اور بے بنیاد ہے۔

سعودی گزٹ کی رپورٹ کے مطابق حال ہی میں ایک پوسٹر سوشل میڈیا پر پھیلایا گیا جس میں لکھا تھا کہ ابوسن نامی سعودی نوجوان مدینہ چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے 38ویں کنزیومر انڈسٹری فیسٹیول میں لائیو پرفارم کرے گا۔ پوسٹر میں اس نوجوان کی تصویر بھی شائع کی گئی اور یہ بھی کہا گیا کہ وہ شرکاءکو اپنے دستخط کے ساتھ آٹو گراف بھی دے گا۔ اتفاق سے یہ وہی نوجوان ہے جسے انٹرنیٹ پر امریکی لڑکی کے ساتھ عشق لڑانے اور فحش رویے کا مرتکب ہونے کے الزام میں گرفتار کیا جاچکا ہے۔

نوجوان کا لیپ ٹاپ چوری ہوگیا اور پھر چند ماہ بعد فیس بک پر ایک ایسا پیغام آگیا کہ پڑھ کر واقعی پیروں تلے زمین نکل گئی، ایسا کیا لکھا تھا؟ آپ بھی جانئے اور کبھی بھی یہ غلطی نہ کریں

جیسے ہی مدینہ چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کی تقریب میں اس کی شرکت کے حوالے سے خبریں پھیلیں تو تشویش کی لہر دوڑ گئی اور طرح طرح کے سوالات اٹھائے جانے لگے۔ صورتحال کی حساسیت کے پیش نظر مدینہ چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے جنرل سیکرٹری عبدالحلیم لال نے ایک بیان جاری کیا جس میں اس بات کی سختی سے تردید کی گئی کہ ابوسن چیمبر کی کسی تقریب میں شریک ہورہا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ چیمبر صرف نمائش، کانفرنس اورفورم جیسی تقریبات کا اہتمام کرتا ہے، جبکہ کسی بھی قسم کے انٹرٹینمنٹ شو منعقد نہیں کئے جاتے۔ انہوں نے اس بات کو سراسر بے بنیاد قرار دیا کہ چیمبر کی کسی تقریب میں ابوسن کی شرکت طے پائی ہے۔ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ تقریب کی جو تاریخ بتائی گئی ہے اس تاریخ پر چیمبر میں کسی بھی قسم کی کوئی تقریب منعقد نہیں ہورہی۔

مزید : عرب دنیا