شہریار آفریدی کے خاندان نے شوہر کو قتل کر کے اراضی پر قبضہ کیا: بیوہ نگہت آفریدی 

شہریار آفریدی کے خاندان نے شوہر کو قتل کر کے اراضی پر قبضہ کیا: بیوہ نگہت ...

  



کوھاٹ (بیورو رپورٹ) وفاقی وزیر سیفران و انسداد منشیات شہریار آفریدی کی کزن کی بیوہ نگہت آفریدی نے کہا ہے کہ شہریار آفریدی کے خاندان والون خصوصاً ان کے والد نادر شاہ نے میرے خاوند یونس آفریدی کو 20 سال قبل قتل کر کے تمام اراضی پر قبضہ کر لیا ہے اور خاندان کی کسی خاتون کو اس کا ملکیتی حق وراثت نہیں دیا جا رہا یہ قبضہ مافیا گروپ ہے جو پراپرٹی زمینوں پر جعلی دستاویزات کے ذریعے قبضہ کرتا آ رہا ہے اگر ہمارے خاندان کی خواتین کو ملکیتی حق وراثت نہ دیا گیا تو شہریار آفریدی کے قبضہ گروپ کے خلاف انسانی حقوق کی تنظیموں سے مل کر اسلام آباد میں احتجاجی مطاہرے کریں گے کوھاٹ پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے نگہت آفریدی نے کہا کہ نادر شاہ آفریدی کی ایماء پر میرے خاوند یونس آفریدی کو 1997 میں قتل کیا گیا اور قاتل احمد نثار کو انہوں نے مفرور کروایا اور پھر ضمانت پر رہائی دلائی اور اپنے بھائی سہیل آفریدی کے ذریعے ہماری تمام اراضی پر قبضہ کر لیا جن کے تمام دستاویزات ہمارے پاس موجود ہیں جبکہ عدالتوں سے بھی ہمارے حق میں فیصلے ہو چکے ہیں مگر وہ اراضی دینے کے لیے تیار نہیں بلکہ اس تنازعہ کی بھینٹ 5 افراد چڑھ چکے ہیں لیکن مجھے تاحال انصاف نہیں مل رہا انہوں نے کہا کہ اس حوالے سے کئی بار ڈپٹی کمشنر کوھات سے بھی ملاقات کی مگر ہمارے خاندان کی کسی خاتون کو اس کا حق نہ مل سکا جبکہ پٹرول پمپ اور ہوٹل والی اراضی بھی ہماری ملکیت ہے جس پر انہوں نے غاصبانہ قبضہ کر رکھا ہے انہوں نے چیف جسٹس آف پاکستان‘ آرمی چیف اور وزیراعظم سے مطالبہ کیا کہ احمد نثار کو گرفتار کر کے سہیل آفریدی کے خلاف ایف آئی آر درج کی جائے خاندان کی خواتین کو ان کی ملکیتی حقوق وراثت دیئے جائیں اور ہماری اراضی کو واگزار کرا کر انہیں آئندہ قبضے کرنے سے روکا جائے اور ہمیں تحفظ دیا جائے۔ 

مزید : پشاورصفحہ آخر