سرکاری ہسپتالوں کی ممکنہ نجکاری، گرینڈ ہیلتھ لائنس کااحتجاج 28ویں روز بھی جاری

  سرکاری ہسپتالوں کی ممکنہ نجکاری، گرینڈ ہیلتھ لائنس کااحتجاج 28ویں روز بھی ...

  



ملتان (وقا ئع نگار) سرکاری ہسپتالوں کی ممکنہ نجکاری کے خلاف گرینڈ ہیلتھ الائنس کا احتجاج اٹھائیسویں روز بھی ہوا ہے(بقیہ نمبر56صفحہ12پر)

۔اس دوران گرینڈ الائنس کی جانب سے نشتر ہسپتال،چلڈرن کمپلیکس کے علاوہ نشتر انسٹیٹیوٹ آف ڈینٹسٹری۔ نشتر برن یونٹ اور انسٹیوٹ آف کارڈیالوجی کے آؤٹ ڈور وارڈ میں بھی ہڑتال کی گئی ہے۔ہڑتال کے دوران نشتر ہسپتال،چلڈرن کمپلیکس کے آؤٹ ڈور، آپریشن تھیٹر، پتھالوجی اور ریڈیالوجی وارڈز میں بھی سروسز کو بند رکھا گیا ہے۔جسکی وجہ سے دور دراز سے آئے مریضوں کو علاج معالجہ میں شدید مشکلات پیش آئیں ہیں ذرائع کے مطابق احتجاج کی وجہ سے تقریبا اڑھائی لاکھ سے زائد مریضوں کو علاج معالجہ کی سہولت سے محروم رہے ہیں۔ اور اسی طرح ہزاروں مریضوں کے آپریشن ملتوی ہوئے ہیں۔احتجاج کے دوران مریضوں اور شہریوں نے حکومت کو کوستے رہے ہیں۔انکے خلاف خوب نعرے بازی بھی کی گئی۔ دوسری جانب گرینڈ الائنس نے ایم ٹی آئی آرڈینینس کی واپسی تک احتجاج اور ہڑتال کا سلسلہ جاری رکھنے کا اعلان کیا ہوا ہے۔انہوں نے کہا کہ حکومت جنتا مرضی انتقامی کارروائیاں کرلے۔احتجاج کا سلسلہ بند نہیں ہوگا۔ایسے اوچھے ہتکنڈوں کا بھرپور جواب دیں گے۔واضح رہے حکومت پنجاب نے سرکاری ہسپتالوں کی ممکنہ نجکاری کے خلاف احتجاج پر اکسانے والے ینگ ڈاکٹر ایسوسی ایشن پنجاب کے صدر قاسم اعوان کو ملازمت سے برطرف کردیا ہے۔جس کے بعد وائی ڈی اے کی ے عہدیداروں میں غصے پایا جاتا ہے۔

احتجاج

مزید : ملتان صفحہ آخر