جج ویڈ یو کیس، انسداد الیکٹرانک کرائم عدالت کو ملزمان پر فرد جرم عائد کرنے سے روک دیا گیا 

        جج ویڈ یو کیس، انسداد الیکٹرانک کرائم عدالت کو ملزمان پر فرد جرم عائد ...

  



اسلام آباد(آن لائن) اسلام آباد ہائی کورٹ میں صوبوں کوجیل قیدیوں کے رولز پر پابندی کے عدالتی حکم پرعمل درآمد کے کیس پر سماعت چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کی دوران کیس انھوں نے ریمارکس دیے کہ عدالت نے نواز شریف کی درخواست ضمانت کے فیصلے میں جیل رولز پرعمل درآمد کا حکم دیا تھاقیدی کو جیل میں سزا کے لیے بھیجا جاتا ہے ٹارچر کے لیے نہیں سزائے موت کے قیدی کی سزا پر جب تک عمل نہیں ہوتا اس کے بھی زندہ رہنے کے بھی حقوق ہیں شدید بیمار قیدیوں کے حوالے سے حکومت کے پاس ازخود نوٹس کا اختیارہے رولز کے مطابق قیدی بیماری کی حالت میں جیل میں رہنے کے قابل نہ ہو تو اس کا باہر سے علاج کرانا ضروری ہے۔ وزارت داخلہ نے تمام صوبوں سے رپورٹس لیکر جمع کرانے کے لیے وقت مانگ لیاعدالت نے ایک ماہ میں جیل رولز پر عمل درآمد کے حوالے سے رپورٹس جمع کرانے کی ہدایت کر دی،کیس کی مزید سماعت 3 دسمبر تک ملتوی کردی گئی۔اسلام آباد ہائی کورٹ نے جج ارشد ملک ویڈیو کیس کی سماعت جسٹس عامر فاروق نے کی عدالت نے انسداد الیکٹرانک کرائم کی عدالت کو ملزمان پر فرد جرم عائد کرنے سے بھی روک دیاانسداد الیکٹرانک کرائم کی عدالت میں جج وڈیو کیس کی کارروائی پر حکم امتناع میں 12 نومبر تک توسیع عدالت نے ایف آئی اے کی درخواست پر حکم امتناع میں توسیع کی عدالت نے حکم دیا کہ انسدادالیکٹرانک کرائم کی عدالت آئندہ سماعت تک مقدمہ کی کارروائی آگے نہ بڑھائے۔وکیل صفائی جہانگیر خان جدون نے دلائل میں بتایا کہ ایف آئی اے کی بددیانتی اس کیس میں واضع ہے،یہ سیاسی کیس ہے آج بھی ارشد ملک کے پاس اتنی سیکورٹی ہے جتنی آپ کے پاس بھی نہیں،جسٹس عامر فاروق نے مکالمہ کیا کہ ایسا معاملے پر بات نہ کریں جو ہمارے سامنے نہیں۔آپ نے جج ارشد ملک کو پارٹی کیوں نہیں بنایا پراسیکیوٹر طیب شاہ نے عدالت کو بتایا کہ جج ارشد ملک کو پارٹی بنانے کی ضرورت نہیں ہے اس موقع پر جہانگیر خان جدون نے عدالت کو بتایا کہ سپریم کورٹ کی دہشت گردی کی تعریف پر بھی ان کا کیس پورا نہیں اترتا۔اسلام آباد ہائیکورٹ نے گاڑیوں کے ٹوکن ٹیکس میں غیر آئینی اضافہ پر وفاق اور ایف بی آر کو نوٹس جاری کر دیا۔جمعرات کو چیف جسٹس جسٹس اطہر من اللہ نے سماعت کی،عدالت نے وفاق اور ایف بی آر کو نوٹس جاری کر دیا۔ عدالت نے ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن آفیسر اسلام آباد 26 نومبر کو ذاتی حیثیت میں طلب کرلیا۔

اسلام آباد ہائیکورٹ

مزید : صفحہ آخر