حکومت نے بات تسلیم نہ کی تو ملک کو جلسہ گاہ میں تبدیل کردینگے،اچکزئی

  حکومت نے بات تسلیم نہ کی تو ملک کو جلسہ گاہ میں تبدیل کردینگے،اچکزئی

  



کوئٹہ/اسلام آباد(آن لائن)پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کے سربراہ محمود خان اچکزئی نے کہا ہے کہ چیف جسٹس آف پاکستان تمام اسٹیک ہولڈرز کی کانفرنس بلائیں آئین وقانون کی حکمرانی کو تسلیم کی جائے تو جمہوری راستہ نکل سکتا ہے اگر حکمرانوں نے لاکھوں افراد کی مجموعہ کی بات تسلیم نہیں کی تو ملک بھر کو جلسہ گاہ میں تبدیل کرینگے اور تمام شاہراہیں بندکریں گے جمعیت علماء اسلام،پیپلز پارٹی،مسلم لیگ(ن)،اے این پی،نیشنل پارٹی اور پشتونخوا ملی عوامی پارٹی متحد ہوئے تو کوئی بھی صوبہ نہیں چل سکتا اگر حکمران نئے انتخابات سے ڈرتے ہیں تو میں یہ گارنٹی دیتا ہوں کہ ملک میں صاف وشفاف انتخابات کرائے جائیں تو میں انتخابات میں حصہ نہیں لونگا ان خیالات کااظہارانہوں نے ایک نجی ٹی وی سے بات چیت کرتے ہوئے کیامحمود خان اچکزئی نے کہا ہے کہ جمہوری جماعتوں کے کارکن کی حوصلے پست نہیں ہوتے نظریاتی لوگ بارش تو کیا گولیوں کا بھی مقابلہ کرنے کیلئے تیار ہیں یہ لاکھوں لوگ اپنے ذات کیلئے نہیں بلکہ عوام کی حقوق کیلئے میدان میں نکلیں ہیں یہ کسی سے زکوٰۃ اور خیرات کیلئے نہیں آئے ہیں بلکہ ملک میں آئین وقانون کی بالادستی چاہتے ہیں اگر انتخابات میں دھاندلی ہوتی ہے تو ایسے انتخابات کے نتائج کا ہم پہلے بھی دیکھ چکے ہیں ملک ٹوٹا اور اکثریت کو اقتدار نہیں دی گئی بلکہ جو ہار گئے تھے ان کو اقتدار حوالے کیاگیا تھاانہوں نے کہاکہ ہمیں سمجھ نہیں آتا کہ لوگ عوام کی طاقت سے کیوں نہیں ڈرتے پارلیمنٹ کو مضبوط بنا یاجائے داخلہ اور خارجہ پالیسی پارلیمنٹ کے ذریعے کیا جائے موجودہ وزیر اعظم فوری طورپر اسمبلی تحلیل کر کے دوبارہ انتخابات کرائیں اگر وہ جیت گئے تو ہم مبارکباد دیں گے ہم سمجھتے ہیں جب تک ملک میں صاف وشفاف انتخابات نہیں ہونگے اس وقت تک ملک کے معاملات ٹھیک نہیں ہونگے۔

محمود اچکزئی

مزید : صفحہ اول