کرتار پور راہداری، پاکستان کا سکھ یاتریوں سے 9، 10نومبر کو فیس نہ لینے کا فیصلہ 

       کرتار پور راہداری، پاکستان کا سکھ یاتریوں سے 9، 10نومبر کو فیس نہ لینے ...

  



اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر محمد فیصل نے کہا ہے کرتارپور راہداری سے خطے کی تاریخ بدلے گی، یاتریوں سے 9 ا و ر 10 نومبر کو فیس نہیں لی جائیگی۔ گزشتہ روز ہفتہ وار میڈیا بریفنگ سے خطاب کرتے ہوئے انکامزید کہنا تھا بھارتی افواج کی بربریت کا سلسلہ مقبوضہ کشمیر میں جاری ہے، 98 روز سے مقبوضہ کشمیر میں کرفیو اور مکمل لاک ڈاؤن ہے، امریکی ذیلی کمیٹی برائے جنوبی ایشیاء کی مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق سے متعلق رپورٹ خوش آئند ہے، مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی اقدامات اور نئے نقشے صرف ڈیمو گرافی تبدیلی کی سازش ہیں، پاکستان ان سیاسی نقشوں کو مسترد کرتا ہے۔ بھارت ہندوتوا نظریہ پر عمل پیرا ہے، باباگرونانک کے جنم دن پر پاکستان نے کرتارپور آنیوا لے یاتریوں کیلئے خصوصی پیکیج بنایا ہے، یاتریوں کیلئے ویزہ، 10 روز قبل فہرستوں کے تبادلہ اور 20 ڈالر فیس کی شرط ختم کی گئی ہے، پاکستان 9 نومبر کو کرتارپور راہداری کا افتتاح کرے گا، ہم نے مقررہ وقت میں راہداری منصوبہ مکمل کیا ہے، عالمی برادری نے پاکستان کے ان خیر سگا لی اقدامات کو سراہا ہے۔ترجمان دفتر خارجہ نے مزید کہا کرتارپور راہداری ایک مخصوص ایریا ہے، جو بھی سیکھ یاتری کرتار پور آئیں گے وہ اسی دن واپس چلے جائیں گے، کرتار پور راہداری آنیوالے سکھ یاتری کسی اور علاقے میں نہیں جاسکیں گے، نوجوت سنگھ سدھو کو ویزا جاری کر دیا گیا ہے، امید ہے وہ تشریف لائیں گے۔

پاکستان فیصلہ

مزید : صفحہ اول