اساتذہ پر ڈنڈے برسانے کا رویہ افسوسناک ہے، خرم شیر زمان

  اساتذہ پر ڈنڈے برسانے کا رویہ افسوسناک ہے، خرم شیر زمان

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر) پاکستان تحریک انصاف کے سینئر رہنما و رکن سندھ اسمبلی خرم شیر زمان نے کہا ہے کہ سندھ پولیس کی جانب سے اساتذہ پر تشدد اور طاقت کے استعمال کی سخت الفاظ کی مذمت کرتے ہیں۔ سندھ حکومت کا اساتذہ کے ساتھ لاٹھی چارج اور ڈنڈے برسانے کا رویہ افسوسناک ہے۔اساتذہ پر تشدد کا یہ پہلا واقعہ نہیں۔اس سے قبل بھی اساتزہ پر واٹر کینن کا استعمال کیا گیا تھا۔ یہ باتیں انہوں نے پریس کلب پر احتجاج کرنے والے اساتذہ سے ملاقات کے بعد میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہیں۔ اس موقع پر ان کے ہمراہ پی ٹی آئی رہنما عمران صدیقی اور دیگر بھی موجود تھے۔خرم شیر زمان نے مزید کہا کہ ایسی کوئی قیامت نہیں آجائے گی اگرحکومتی نمائندے یہاں آجائیں اور انکے معاملات حل کریں۔جو رویہ صوبہ سندھ میں اساتزہ کے ساتھ رویہ رکھا جارہا ہے وہ کسی صورت قابل قبول نہیں ہے۔ہم پی ٹی آئی کے ارکان اساتذہ کے حقوق کی خاطر ان کے ساتھ کھڑے ہیں۔ احتجاج کرنا ہر شہری کا حق ہے جس کی اجازت قانون نے انہیں دی ہے۔مراد علی شاہ نے کہا تھا کہ سندھ میں تعلیم ایجنسی نافز کردونگا۔حالات یہ ہے تعلیمی ایمرجنسی کے کہ امتحانات میں چیٹنگ ہورہی ہے۔اسکولوں میں گرلز کے لئے واش رومز نہیں ہیں لیب نہیں ہے۔سندھ جیسا تعلیم کا یہ حال پوری دنیا میں نہیں ہوگا۔خرم شیر زمان نے مزید کہا کہ وزیر اعلی جو کرینگے انکے ساتھ بھی یہی رویہ ہوگا۔اگر ماؤں، بہنوں کے ساتھ یہ رویہ رکھا گیاآپ بھی ایک دن فٹ پاتھ پر ہونگے۔مراد علی شاہ سندھ حکومت چلانے میں ناکام ہوگئے ہیں۔ہر شعبے میں اربوں روپے کی کرپشن ہے۔سندھ اسمبلی میں وزیر اعلی سندھ نہیں آتے ہمارے سوالات کے جوابات نہیں دیتے۔ اساتذہ اپنے حقوق کے لیے سڑکوں پر ہیں، چیف جسٹس سے درخواست ہے کہ اس کا نوٹس لیں۔جمعہ کو سندھ اسمبلی کے اجلاس میں اساتزہ کے حق میں آواز اٹھائینگے۔ان کا مزید کہنا تھا کہاسلام آباد میں جو احتجاج ہورہا ہے وہ جائز ہے اور یہاں جو استاد بیٹھے ہیں وہ ناجائز ہیں؟مراد علی شاہ یہاں آئیں اور ان سے مزاکرات کریں۔ پرامن احتجاج ہر پاکستانی کا حق ہے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر /میٹروپولیٹن 4