انسداد ٹائیفائیڈ کیلئے حفاظتی  ٹیکوں کی مہم میں توسیع

 انسداد ٹائیفائیڈ کیلئے حفاظتی  ٹیکوں کی مہم میں توسیع

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر)حکومت سندھ کے حفاظتی ٹیکوں سے متعلق صوبائی توسیعی پروگرام (EPI)میں وفاقی EPI، یونیسف اور عالمی ادارہ برائے صحت (WHO)کے تعاون سے انسداد ٹائیفائیڈ بخار کیلئے حفاظتی ٹیکوں کی مہم کا انعقاد کیا گیا۔ مہم سندھ کے شہری علاقوں میں 18سے 30نومبر تک چلائی جائے گا۔ یہ ویکسین 9ماہ سے 15سال کی عمر تک کے بچوں کو دی جائے گی۔ جبکہ اسکولوں اور EPIمراکز کے ذریعہ ویکسین کی فراہمی ممکن بنائی جائے گی۔ حفاظتی ٹیکوں کی مہم محکمہ صحت کی جانب سے سول سوسائٹی کی تنظیموں کے تعاون سے آگاہی بڑھانے اورویکسین کے استعمال میں اضافہ کیلئے چلائی جائے گی۔  کراچی میں انسداد ٹائیفائیڈ بخارمہم کے بارے میں آگاہی سیشن کا انعقاد کیا گیا،جس میں حفاظتی ٹیکوں کے پراجیکٹ ڈائریکٹر ڈاکٹر اکرم سلطان کا کہنا تھا کہ ٹائیفائیڈ بخاز ایک خطرناک بیماری ہے جس سے متاثر ہونے والوں میں بچوں کی تعداد زیادہ ہے۔ عالمی ادارہ صحت (WHO) نے پاکستان کی درجہ بندی زیادہ متاثرہ ملک(high incidence country)کی فہرست میں کی ہے۔ اس کے علاوہ تشویشناک بات یہ ہے کہ اس بیماری کی اینٹی بائیوٹکس کے خلاف قوت مدافعت بھی زیادہ ہے۔ صرف کراچی اور حیدر آباد میں ہی بڑے پیمانے پر ٹائیفائیڈ بخار کی ادویات کے خلاف مدافعت کے باعث 10ہزار سے زائد کیسسز ہو چکے ہیں۔ ٹائیفائیڈ بخار کا علاج نہ کرنے کے نتیجہ میں مکمل طور پر معذوری یا موت بھی واقع ہو سکتی ہے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر /میٹروپولیٹن 4