تھر میں ٹڈی دل کا خاتمہ ممکن نہیں ہو رہا ہے،سریندرولاسائی

      تھر میں ٹڈی دل کا خاتمہ ممکن نہیں ہو رہا ہے،سریندرولاسائی

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر)پاکستان پیپلزپارٹی کے رکن سندھ اسمبلی سریندر ولاسائی نے کہاہے کہ وفاقی حکومت کی مجرمانہ غفلت کی وجہ سے صحرائے تھر میں ٹڈی دل کا خاتمہ ممکن نہیں ہو رہا ہے۔تھرپارکر سے تعلق رکھنے والے پیپلزپارٹی کے رکنِ سندھ اسمبلی نے ٹڈی دل کی صورتحال پراپنے ردعمل میں کہاکہ وفاقی حکومت ٹڈی دل کے خاتمے کے لیئے مطلوب کیمیکلز کی فراہمی میں تاخیری حربے استعمال کرررہی ہے۔مذکورہ مجرمانہ غفلت کی وجہ سے حالیہ بارشیں بھی تھری عوام کے لیئے فائدہ مند نہیں بن سکیں گی۔انہوں نے کہاکہ اس بار ہونے والی بارشوں کے باعث تھری عوام اور ان کے مویشیوں کے لیئے ہونے والی خوراک اورچارہ سال بھر کے لیئے کافی تھا،حکومتِ سندھ اور ضلعی انتظامیہ نے وفاقی حکومت کے پلانٹ پروٹیکشن ڈپارٹمنٹ کو کئی خط لکھ کر توجہ مبذول کرانے کی کوشش کی۔سریندر ولاسائی نے کہاکہ ٹڈی دلوں کے حملے میں مٹھی، اسلام کوٹ، چھاچھرو، کلوئی اور ڈیپلو کی تحصیلوں میں ہرے بھرے کھیت کھلیان برباد ہو رہے ہیں ضلعی انتظامیہ نے اپنے تئیں تباہی کو روکنے کے لیئے ہر ممکن اقدامات کررہی ہے۔لیکن وفاقی حکومت کی جانب سے اسپرے کے لیئے مطلوب ادویات کی عدم فراہمی نے مشکلات میں اضافہ کردیاہے۔انہوں نے مطالبہ کیاکہ وفاقی حکومت تھر کی ضلعی انتظامیہ کو بلاتاخیر ٹڈی دل کے خاتمے کے لیئے مطلوب کیمیکلز فراہم کرے اورتاخیری حربوں میں ملوث افراد کے خلاف کاروائی کرے، ورنہ تھری عوام کو ہونے والے نقصان کا ازالے کی پابند ہے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر /میٹروپولیٹن 4


loading...