مولانا فضل الرحمن کے دھرنے کا کوئی ایجنڈا نہیں وہ ملک میں انا ر کی پھیلا نا چاہتے ہیں: شوکت یوسفزئی 

    مولانا فضل الرحمن کے دھرنے کا کوئی ایجنڈا نہیں وہ ملک میں انا ر کی پھیلا ...

  



پشاور(سٹاف رپورٹر) صوبائی وزیر اطلاعات شوکت یوسفزئی نے کہا ہے کہ مولانا فضل الرحمن کے دھرنے کا کوئی ایجنڈا نہیں وہ ملک میں انارکی پھیلانا چاہتے ہیں۔ فضل الرحمن کو سوچنا چاہیے کہ ان کو دھرنے کے لیے دھکا دینے والے کون تھے مولانا فضل الرحمان کے دھرنے سے ملک کی معیشت کا نقصان ہو رہا ہے۔ مولانا 10 سال تک کشمیر کمیٹی کے چیئرمین رہے لیکن کشمیریوں کے لیے کچھ نہیں کیا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے قیوم سپورٹس کمپلیکس پشاور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ مولانا فضل الرحمان نے 2014 میں کہا تھا کہ ایک سال میں حکومت کی کارکردگی نہیں جانچی جا سکتی حکومت کو کارکردگی دکھانے کے لیے پورا پورا وقت دینا چاہیے۔ مولانا اپنے دھرنے سے اپوزیشن کی لیڈرشپ کا حصول اور کشمیر مسئلے کو پیچھے دھکیلنا چاہتے تھے جس میں وہ کامیاب ہو گئے ہیں اور یہ مودی اور بھارت بھی چاہتا تھا۔ شوکت یوسفزئی نے کہا کہ دوسری حکومتوں کے مقابلے میں ہماری حکومت میں مہنگائی کی شرح کم ہے۔ پی پی پی کی حکومت میں پہلے سال مہنگائی کی شرح  21.5 فیصد، مسلم لیگ ن کی8.5 فیصد اور پاکستان تحریک انصاف کی 8 فیصد رہی لیکن اپوزیشن نے ایک ساتھ ملکر غلط پروپیگنڈا کیا۔ وزیراعظم عمران خان نے پہلے کہا تھا کہ جب بھی کرپٹ لوگوں کا احتساب کرونگا تو تمام کرپٹ لوگ اکٹھے ہو جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ مولانا فضل الرحمن کے دھرنے میں پی پی پی اور پی ایم ایل ن کے ورکرز شرکت نہیں کر رہے، دھرنے میں مدرسوں کے طالب علموں کو لایا گیا ہے جن سے انکا قیمتی وقت ضائع ہو رہا ہے۔

پشار(سٹاف رپورٹر)خیبر پختونخوا کے وزیر اطلاعات شوکت یوسفزئی نے کہا ہے کہ پشاور میں نیشنل گیمز کا انعقاد خوش آئند ہے اس سے جہاں کھیلوں کی سرگرمیوں میں اضافہ ہوگا وہاں خیبر پختونخوا اور پاکستان کا امیج  بہتر ہوگا، نومبر سے شروع ہونے والے نیشنل گیمز کیلئے سیکورٹی کے فول پروف انتظامات مکمل کرلیے گئے ہیں اور کھلاڑیوں کو سازگار اور بہترین ماحول فراہم کیا جائے گا ان خیالات کا اظہار انہوں نے قیوم سپورٹس کمپلیکس پشاور میں نیشنل گیمز کیلئے ہونے والے انتظامات کا جائزہ لینے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ شوکت یوسفزئی نے کہا کہ نیشنل گیمز میں شرکت کرنے والے کھلاڑیوں کے رہائش اور طبی سہولیات کے ساتھ ساتھ تمام انتظامات مکمل کر لیے گئے ہیں۔ نیشنل گیمز کے بعد پشاور میں انٹرنیشنل کھیلوں کے انعقاد کے لیے کوششیں کریں گے ہم چاہتے ہے کہ پاکستان سپر لیگ کے میچز پشاور میں بھی کرائے جائیں۔ انہوں نے کہا کہ ان کھیلوں سے دنیا کو امن کا پیغام جائے گا ہم 15 سال تک دہشتگردی کا شکار رہے لیکن اب یہاں مکمل امن وامان ہے گیمز میں شرکت کرنے والوں کی بہترین مہمان نوازی کی جائے گی۔ نیشنل گیمز میں خواتین کھلاڑیوں کی شرکت خوش آئند ہے۔ ایک سوال کے جواب میں صوبائی وزیر نے کہا کہ ہم نے دھرنے کے لیے سڑکیں بند نہیں کیں تو کھیلوں کے لیے کیوں بند کریں گے نیشنل گیمز کے لیے سیکیورٹی کے بہترین انتظامات کیے گئے ہیں کھلاڑیوں کو سازگار ماحول فراہم کیا جائے گا۔ صوبائی وزیر نے نیشنل گیمز کے لیے سپورٹس کمپلیکس میں ہونے والے انتظامات کا جائزہ لیا اور کھلاڑیوں سے ملاقات کی

مزید : صفحہ اول