اسلام آباد ہائی کورٹ نے سانحہ تیز گام کی آزادانہ انکوائری کے لیے دائر درخواست پر سماعت22نومبر تک ملتوی کر دی

اسلام آباد ہائی کورٹ نے سانحہ تیز گام کی آزادانہ انکوائری کے لیے دائر ...
اسلام آباد ہائی کورٹ نے سانحہ تیز گام کی آزادانہ انکوائری کے لیے دائر درخواست پر سماعت22نومبر تک ملتوی کر دی

  



اسلام آباد( ڈیلی پاکستان آن لائن)اسلام آباد ہائی کورٹ میں سانحہ تیز گام کی آزادانہ انکوائری کے لیے دائر درخواست پر سماعت ہوئی، جسٹس محسن اختر نے وفاقی حکومت کو نوٹس جاری کرتے ہوئے سماعت 22نومبر تک ملتوی کر دی۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ میں سانحہ تیز گام کی آزادانہ انکوائری کے لیے دائر درخواست پر سماعت ہوئی،وکیل ریاض حنیف راہی نے عدالت سے استدعا کی کہ حادثے کے شواہد کو ختم کیا جا رہا ہے،ریلوے تھانے میں ایف آئی آر درج ہوئی ،شفاف تحقیقات کیسے ہوگی،ایک دو نہیں بلکہ آئے روز ریلوے حادثات ہو رہے ہیں،وزیراعظم حادثے کی شفاف انکوائری کیلئے وزیرریلوے کوعہدے سے ہٹائیں، جسٹس محسن اختر نے ریمارکس دیئے کہ وفاقی حکومت کو نوٹس جاری کر رہے ہیں یہ ضروری ہے،اسلام آباد ہائیکورٹ نے نے وفاقی حکومت کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیا،عدالت نے تیزگام ریلوے حادثے کی آزادانہ انکوائری کیلئے درخواست کی سماعت22نومبرتک ملتوی کر دی۔

مزید : قومی


loading...