جید علمائے کرام نے سزائے موت پر پابندی کو مداخلت فی الدین قرار دیدیا

جید علمائے کرام نے سزائے موت پر پابندی کو مداخلت فی الدین قرار دیدیا

 فیصل آباد، جھنگ ، چنیوٹ، ٹوبہ ٹیک سنگھ (آن لائن) پاکستان سنی تحریک کے علماءبورڈ کے ساتھ تعلق رکھنے والے ایک سو سے زائد جید علماءکرام ممتاز مفتیان سمیت دیگر مکتبہ فکر دیوبند ، اہل حدیث اور اہل تشیع کے علماءکرام نے سزائے موت پر پابندی قائم رکھنے کے اعلان کو مداخلت فی الدین قرار دیتے ہوئے مسترد کردیا انہوں نے کہا کہ نواز لیگ حکومت اور حکمرانوں نے زرداری کی پالیسیوں کوجاری رکھ کر امریکہ اسرائیل بھارت اور یہود ونصاری کی ڈکٹیشن قبول کرنے کا اشارہ دیدیا ہے اور ورلڈ بینک سمیت آئی ایم ایف سے قرض لینے کیلئے خوداری کو داﺅ پر لگا دیا پاکستان اور اس کے عوام کو ان کی غلامی میں دیدیا ہے علماءکرام اور مفتیان دین نے کہا ہے کہ سزائے موت پرپابندی سے پاکستان کا امن وامان درہم برہم ہو جائیگا اور قتل عام کا سلسلہ بھی جاری رہے گا علماءکرام اور مفتیان کرام نے علی الاعلان کہا ہے کہ موجودہ حکمرانوں کے اسلام دشمن فیصلوں کو کسی صورت قبول نہیں کیا جائے گا حکومت اپنے فیصلوں پر نظر ثانی کرے ۔

مزید : صفحہ آخر