گھریلو ملازمہ سے دست درازی،ڈی ایچ اے کے ڈاکٹرکی عدالت طلبی

گھریلو ملازمہ سے دست درازی،ڈی ایچ اے کے ڈاکٹرکی عدالت طلبی

  

لاہور(نامہ نگار)سیشن جج لاہور بہادرعلی خان نے گھریلو ملازمہ روبینہ بی بی سے دست درازی کرنے ،تصاویر بنانے اور بداخلاقی کرنے کے الزام میں ڈی ایچ اے کے رہائشی ڈاکٹر ظہیراحمد کو 9 اکتوبر کو طلب کرلیاہے۔عدالت نے ایس ایچ او تھانہ ڈیفنس اے سے بھی رپورٹ طلب کرتے ہوئے ذاتی طور پر طلب کیا ہے۔ سیشن جج بہادرعلی خان کو اسلام آباد کی رہائشی روبینہ نے درخواست دی کہ وہ ایک غریب فیملی سے تعلق رکھتی ہے اس سے ڈی ایچ اے کی خاتون ڈاکٹر سلمیٰ نے رابط کیا اس کو ڈاکٹر ظہیرجس کی ٹانگوں کا آپریشن ہوا تھا ،اس کی خدمت کے لئے ملازم رکھا اس کی ذمہ داری تھی کہ وہ ڈاکٹر کی ٹانگوں کی مالش کرے اور اس کے کھانے کا خیال رکھے ،اس کے لئے اسے 12ہزارروپے تنخواہ پر رکھا گیا۔شروع میں ڈاکٹر ظہیرٹھیک رہا لیکن جب ڈاکٹر سلمیٰ کسی کام سے دوسرے شہر گئی ان کی عدم موجودگی مین ڈاکٹر ظہیر نے اس کو زدوکوب کرنا شروع کردیا اس کے ساتھ بداخلاقی کی ،اس کی تصاویر بنائیں،اس نے ڈاکٹر سلمہ کو بتایا لیکن کوئی شنوائی نہ ہوئی

وہ ڈاکٹرظہیر کو جھانسہ دے کر اپنے گھر اسلام آباد چلی گئی ،عدالت سے استدعا ہے کہ ڈاکٹر ظہیر کے خلاف پولیس کو کارروائی کا حکم دیا جائے ،عدالت نے درخواست پر ڈاکٹر ظہیرکو طلب کرلیا اور ساتھ ہی ایس ایچ او ڈیفنس اے کو بھی ذاتی طور پر9 اکتوبر کو پیش ہونے کا حکم دیا ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -