بے مقصد دھرنوں سے ضائع ہونیوالے قیمتی وقت کی تلافی محنت سے کر رہے ہیں ، شہباز شریف

بے مقصد دھرنوں سے ضائع ہونیوالے قیمتی وقت کی تلافی محنت سے کر رہے ہیں ، شہباز ...

  

 لاہور(جنرل رپورٹر) وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ پاکستان کی 60 فیصد آبادی نوجوانوں پر مشتمل ہے اور یہ نوجوان ملک و قوم کے روشن مستقبل کی نوید ہیں، یہی وجہ ہے کہ پاکستان مسلم لیگ (ن) کی پنجاب حکومت نے نوجوانوں کی ترقی اور انہیں بااختیار بنانے کیلئے تاریخی نوعیت کے منفرد اقدامات کئے ہیں جن کا بنیادی مقصد پاکستان کے مستقبل کو تابناک بنانا ہے۔ نوجوانوں کے فلاحی پروگراموں کیلئے وسائل کی فراہمی روشن مستقبل پر سودمند سرمایہ کاری ہے۔ وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف نے ان خیالات کا اظہار یہاں پاکستان مسلم لیگ (ن) کے منتخب نمائندوں کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ پاکستان مسلم لیگ (ن) اپنے منشور کے مطابق خدمت خلق اور عوام کو بنیادی سہولتوں کی فراہمی کے ایجنڈے پر عمل پیرا ہے۔ وسائل کو قوم کی امانت سمجھتے ہوئے ایک ایک پائی ایمانداری سے عوام کی ترقی و خوشحالی کے منصوبوں پر صرف کی جا رہی ہے۔ ’’خود روزگار سکیم‘‘ ، پنجاب ایجوکیشنل انڈومنٹ فنڈ، دانش سکولز، میٹرو بس سروس، آشیانہ ہاؤسنگ سکیم جیسے فلاحی پروگرام وسائل عوام کی ترقی پر خرچ کرنے کی اعلیٰ مثالیں ہیں۔ حکومت پنجاب کے بے مثال فلاحی پروگراموں سے صوبے کے غریب عوام بڑی تعداد میں مستفید ہو رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سکل ڈویلپمنٹ کا ایک بڑا پروگرام بھی کامیابی سے جاری ہے۔ جنوبی پنجاب سے شروع کئے گئے اس پروگرام کا دائرہ کار صوبے بھر میں پھیلایاجارہا ہے۔ سکل ڈویلپمنٹ پروگرام بھی نوجوانوں کو بااختیار بنانے کی غرض سے شروع کیا گیا ہے اور اس پروگرام کے تحت اب تک ہزاروں بچوں اور بچیوں کو مختلف ہنر کی تربیت دی گئی ہے۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ پنجاب ایجوکیشنل انڈومنٹ فنڈکی سالانہ رقم2ارب سے بڑھا کر 4ارب روپے کی جا رہی ہے جس سے مستحق اور ذہین طلباء و طالبات کو تعلیمی وظائف کی تعداد میں اضافہ کیا جائے گا۔ پنجاب ایجوکیشنل انڈومنٹ فنڈ کے تحت 1لاکھ غریب خاندانوں کے ذہین بچوں اوربچیوں کوزیورتعلیم سے آراستہ کرنے کیلئے میرٹ کی بنیاد پر وظائف دےئے جا چکے ہیں ۔ وظائف کی فراہمی کے اس عظیم الشان پروگرام میں نہ صرف پنجاب بلکہ سندھ ، بلوچستان،خیبر پختونخوا،آزاد کشمیر،فاٹااورگلگت بلتستان کے کم وسیلہ مگر محنتی و قابل طلباء و طالبات کو شامل کیاگیا ہے ،جس سے قومی یکجہتی کو فروغ مل رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ برس کے دھرنوں اور احتجاجی سیاست نے جہاں ترقی کے سفر میں رخنہ ڈالا وہاں نوجوانوں کے فلاحی پروگراموں میں بھی رکاوٹیں کھڑی کیں۔ لیکن اگر ارادے مضبوط ہوں اور خدمت خلق کا جذبہ موجود ہو تو عوام کی ترقی و خوشحالی کے راستے میں کوئی رکاوٹ حائل نہیں ہو سکتی۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے بے مقصد دھرنوں سے قوم کے ضائع ہونے والے قیمتی وقت کی تلافی کا عزم کر رکھا ہے۔ انشااللہ محنت، محنت اور صرف محنت کے ذریعے ملک و قوم کی ترقی کی منزل حاصل کریں گے۔ ملک سے غربت، جہالت، بیروزگاری اور بجلی کے اندھیرے دور کرکے ملک کو قائدؒ اور اقبالؒ کا پاکستان بنائیں گے۔ منتخب نمائندوں نے اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ شہبازشریف کی قیادت میں پنجاب حکومت نے صوبے کی ترقی کیلئے تاریخی نوعیت کے اقدامات کئے ہیں اور نوجوانو ں کو بااختیار بنانے کے حوالے سے بھی موثر حکمت عملی اپنائی ہے۔ وزیراعلیٰ شہباز شریف کے اقدامات بارآور ثابت ہو رہے ہیں اور میگا پراجیکٹس کی تکمیل سے عوام کو ریلیف مل رہا ہے۔وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف سے یہاں پاکستان میں بیلجیئم کے سفیر ورہیڈن فریڈرک (Mr. Verheyden Frederic ) کی قیادت میں ٹریڈ مشن نے ملاقات کی ،جس میں باہمی دلچسپی کے امور ،تجارتی و اقتصادی تعلقات کے فروغ اورمختلف شعبوں میں تعاون بڑھانے کے امکانات پر تبادلہ خیال ہوا ۔وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے بیلجیئم کے ٹریڈ مشن سے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ پاکستان اور بیلجیئم کے درمیان اچھے دوستانہ تعلقات موجود ہیں تاہم دونوں ممالک کے مابین تجارتی تعاون بڑھانے کی ضرورت ہے اور اس مقصد کے لئے دونوں ملکو ں کے درمیان تجارتی وفود کا تبادلہ تسلسل کے ساتھ جاری رہنا چاہیے۔انہوں نے کہاکہ بیلجیئم یورپی یونین کا ایک اہم رکن ملک ہے او رہم لجیئم کے ساتھ تجارتی تعلقات کو فروغ دینے اور مختلف شعبوں میں تعاون بڑھانا چاہتے ہیں ۔پنجاب اوربیلجیئم کے درمیان انفارمیشن ٹیکنالوجی ،ڈیری فارمنگ ، سیلاب سے بچاؤ،آبپاشی، توانائی اور انفراسٹرکچر کے شعبوں میں تعاون بڑھانے کے وسیع امکانات موجود ہیں ۔ بیانفارمیشن ، ٹیکنالوجی ،ڈیری فارمنگ ، سیلاب سے بچاؤ اور آبپاشی کے شعبوں میں بیلجیئم کی مہارت اور تجربے سے استفادہ کرنے کے خواہاں ہیں۔انہوں نے کہاکہ پنجاب حکومت نے صوبے میں بہترین خدمات کی فراہمی کے لئے انفارمیشن ٹیکنالوجی کے ذریعے اصلاحات متعارف کرائی ہیں۔سرکاری محکموں کی کارکردگی بہتر بنانے کے لئے ڈیجیٹل مانیٹرنگ نظام متعارف کرایا گیاہے۔انہوں نے کہاکہ پنجاب میں غیر ملکی سرمایہ کاروں کو سرمایہ کاری کے لئے سازگار ماحول فراہم کیاگیاہے اور غیرملکی سرمایہ کاروں کو ترجیحی بنیادوں پر سہولتیں مہیا کی جا رہی ہیں۔انہوں نے کہاکہ مختلف شعبوں میں جدید ٹیکنالوجی کے استعمال سے پیداوار میں اضافہ ممکن ہے۔پنجا ب حکومت نے صوبے میں جدید ٹیکنالوجی کے فروغ کے لئے ٹھوس اقدامات کئے ہیں۔وزیراعلیٰ نے کہاکہ توانائی اور معیشت کے فروغ کا آپس میں چولی دامن کا ساتھ ہے۔حکومت توانائی سیکٹر پر خصوصی توجہ دے رہی ہے۔2017 کے اختتام تک توانائی کے منصوبوں کی تکمیل سے ہزاروں میگا واٹ بجلی پیدا ہوگی۔انہوں نے کہاکہ سرمایہ کاری کے فروغ کیلئے دہشت گردی اور انتہاء پسندی کے چیلنج سے آہنی ہاتھوں سے نمٹاجا رہاہے۔پاکستان کی سیاسی و عسکری قیادت دہشت گردی کے خاتمے کے لئے ایک صفحہ پر ہے۔بیلجیئم کے سفیر ورہیڈن فریڈرک نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ پنجاب حکومت کے ساتھ تجارتی او رمعاشی تعلقات کو فروغ دینے کے خواہاں ہیں۔ پنجاب کے ساتھ مختلف شعبوں میں تعاون بڑھانے کے لئے ہر ممکن اقدامات اٹھائیں گے ۔انہوں نے کہاکہ وزیراعلیٰ شہبازشریف صوبے کے عوام کی فلاح و بہبود کے لئے عزم کے ساتھ کام کررہے ہیں۔صوبائی وزراء ڈاکٹر عائشہ غوث پاشا، خلیل طاہر سندھو، مشیر ڈاکٹر اعجاز نبی ، چیئرمین منصوبہ بندی و ترقیات، سیکرٹری خوراک اور چیئرمین پنجاب سرمایہ کاری بورڈ بھی اس موقع پر موجود تھے۔بیلجیئم کے ٹریڈ مشن نے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی کمپنیوں کے سربراہ شامل تھے۔ وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے صوبائی کمیٹی برائے انسداد ڈینگی کو ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ راولپنڈی ، ملتان اور دیگر شہروں میں انسداد ڈینگی کیلئے جنگی بنیادوں پر کام کیا جائے اور ڈینگی کے مرض کو کنٹرول کرنے کیلئے ہر وہ قدم اٹھایا جائے جو انسانی بس میں ہے۔ وزیراعلیٰ نے ہدایت کی کہ ان ڈور اور آؤٹ ڈور سرویلنس پر خصوصی توجہ دی جائے اور راولپنڈی اور ملتان میں ڈینگی کے مرض کے سدباب کیلئے موثر اقدامات تسلسل کے ساتھ جاری رکھے جائیں۔ انہوں نے کہا کہ انسداد ڈینگی کیلئے کئے جانے والے اقدامات میں کوتاہی کی کوئی گنجائش نہیں ۔ ٹاؤن ایمرجنسی رسپانس کمیٹیاں انسداد ڈینگی کیلئے فعال انداز میں کام کریں۔ ہسپتالوں میں ڈینگی سے متاثرہ مریضوں کی مکمل دیکھ بھال اور علاج معالجے پر خصوصی توجہ دی جائے۔ انہوں نے کہا کہ متعلقہ اداروں کو عوام کو ڈینگی کے مرض سے بچانے کیلئے فعال اور متحرک کردار ادا کرنا ہے، اس ضمن میں کسی قسم کے تساہل یا غفلت کو برداشت نہیں کیا جائے گا۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ منتخب نمائندے، انتظامیہ اور متعلقہ ادارے دن رات محنت کرکے مرض کو کنٹرول کرنے کیلئے جت جائیں۔

مزید :

صفحہ اول -