کاشتکار وں کے صبر کا پیمانہ لبریز ہو چکا ہے، کسان اتحاد

کاشتکار وں کے صبر کا پیمانہ لبریز ہو چکا ہے، کسان اتحاد

  

لاہور ( کامرس رپورٹر)پاکستان کسان اتحاد (رجسٹرڈ)کے مرکزی صدرخالد محمودکھوکھرنے مطالبہ کیا ہے کہ ملک میں زرعی ایمر جنسی کا نفاذ لگا کر زرعی شعبہ کو بچایاجائے کیو نکہ مو جو دہ حکو مت کی غلط معاشی پالیسیوں اور زراعت پر ناجائزٹیکسوں کی وجہ سے کاشت کارکی پیداواری لاگت میں بے پناہ اضافہ اوراجناس کا ریٹ انتہائی کم ہے جس کی وجہ سے کاشت کارمشکلات و استحصال کا شکارہے اگر حکومت نے ہوش کے ناخن نہ لیتے ہوئے کاشتکاروں کے مسائل او ر جائز مطالبات نہ مانے تو ملک میں خوراک کی ایسی قلت پیداہوجائے گی جس کی تاریخ میں مثال نہیں ملے گی ۔ملک کے کاشتکار وں کے صبر کا پیمانہ لبریز ہو چکا ہے رواں ماہ میں ہی ملک کے ہزاروں کاشتکار اور کسان اپنے حقوق اور زراعت دشمن پالیسیوں کے خلاف پاکستان بھر کی شاہراہوں پر ٹر یکٹر ٹرالیاں کھڑی کرتے ہوئے ہر قسم کی ٹر یفک کا پہیہ جام کر دیں گے جبکہ الیکشن کمیشن پاکستان کی جانب سے کسانوں کوسنے بغیر کسان پیکج پرعملدرآمد روکنے کے خلاف ہم سپریم کورٹ آف پاکستان میں اپیل کرنے جارہے ہیں۔ ان خیالا ت کا اظہار انھوں نے گزشتہ روزلاہور پریس کلب میں دیگر عہدیداران کے ساتھ پریس کانفرنس کر تے ہوئے کیا جبکہ اس مو قع پر صدر پنجاب غلام مصطفے، سر دار اورنگزیب ،چوہدری فر ید ،سید خورشید ، منظر حسن و دیگر موجو د تھے ۔ خالد محمو د کھو کھر کا کہنا تھا کہ ہم نے کاشتکاروں کودرپیش مسائل کے حوالے سے ہرمرتبہ حکومت وقت کو آگاہ کیا لیکن کسی نے بھی ہماری بات پر کان نہیں دھرے جس کے باعث ملک میں مہنگائی،بیروزگاری اورامن و امان کی صورتحال خراب سے خراب ہوتی جارہی ہے۔انھوں نے کہاکہ گزشتہ بجٹ میں کھادوں میں بیس ارب روپے کی سبسڈی کا اعلان کیا گیا تھا جس پر تاحال عملدرآمدنہیں ہوسکا ۔

مزید :

صفحہ آخر -