مجاہد کامران کیخلاف دائر پروفیسر خجستہ ریحان کی درخواست خارج

مجاہد کامران کیخلاف دائر پروفیسر خجستہ ریحان کی درخواست خارج

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے وائس چانسلر پنجاب یونیورسٹی ڈاکٹر مجاہد کامران کے خلاف دائر پروفیسر خجستہ ریحان کی درخواست خارج کردی ہے ۔درخواست میں موقف اختیار کیا گیاتھا کہ خاتون صوبائی محتسب جنسی طور پر ہراساں کرنے سے متعلق ان کی درخواست پر وائس چانسلر کے خلاف آبزرویشن دے چکی ہیں ،وائس چانسلر کوکام کرنے سے روکا جائے ۔ مسٹرجسٹس ساجد محمود سیٹھی کی عدالت میں کیس کی سماعت کے دوران ڈاکٹر مجاہد کامران کی جانب سے ڈاکٹر خالد رانجھا جبکہ یونیورسٹی کی جانب سے اس کے لیگل ایڈوائز ملک اویس خالد پیش ہوئے جنھوں نے عدالت کو بتایا کہ صوبائی محتسب کے فیصلے کے خلاف وائس چانسلر ڈاکٹر مجاہد کامران نے گورنر پنجاب کو اپیل کی تھی جس پر گورنر پنجاب نے حقائق کو مد نظر رکھتے ہوئے خاتون صوبائی محتسب کا فیصلہ کالعدم قرار دے دیا ہے وائس چانسلر کے خلاف کوئی الزام ثابت نہیں ہوا اور تمام کہانی بے بنیاد ہے ،رٹ پٹیشن ناقابل سماعت اور غیرموثر ہے۔ گورنر پنجاب کا حکم نامہ عدالت میں پیش کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سابق خاتون صوبائی محتسب نے جنسی ہراسگی کیس میں واضح طور پر لکھا تھا کہ وہ اس کیس کو سن نہیں سکتی اس کے باوجود انہوں نے وائس چانسلر کے خلاف فیصلے میں آبزرویشنز دے دیں ۔ فاضل جج نے فریقین کا موقف سننے کے بعد درخواست خارج کردی ۔

مجاہد کامران

مزید :

صفحہ آخر -