آئی ایم ایف کا پاکستان پر پابندیاں لگانا افسوسناک ہے،ڈاکٹر امجد

آئی ایم ایف کا پاکستان پر پابندیاں لگانا افسوسناک ہے،ڈاکٹر امجد

  

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر)آل پاکستان مسلم لیگ (APML)کے سیکرٹری جنرل ڈاکٹر محمد امجد نے کہا ہے کہ IMFکی طرف سے پاکستان پرپابندیاں لگانا ملکی خودمختاری میں مداخلت کے مترادف ہے،پاکستان کی معاشی صورتحال بھوٹان سے بھی نیچے جاناحکمرانوں کے لئے باعث شرم ہے،مشرف دور میں پاکستان ،بھوٹان جیسے ممالک کی امداد کیاکرتا تھا،حکمران قوم کو قرضوں کی دلدل میں دھنسا رہے ہیں،ملکی معیشت کو مستحکم کرنے کے لئے قرض نہیں تجارت کا اصول اپنایاجائے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز پارٹی کے میڈیا سیل سے ٹیلی فونک گفتگو کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ آئی ایم ایف کی طرف سے پاکستان کو ڈکٹیٹ کرنااور اپنی مرضی کی شرائط عائد کرنا باعث شرم ہے،یہ کسی ملک کی آزادی اور خودمختاری میں کھلم کھلا مداخلت ہے۔حکمران قرض حاصل کرنے کے لئے قوم کے مستقبل بارے سوچے بغیر آئی ایم ایف کی شرائط مانتے چلے جارہے ہیں جس کا خمیازہ قوم کو بھگتنا پڑے گا۔ گزشتہ دنوں منظرعام پر آنے والی ایک رپورٹ کے مطابق پاکستان کی معاشی حالت بھوٹان جیسے ملک سے بھی کم تر ہے۔یہ صورتحال ہمارے حکمرانوں کی دوراندیشی سے عاری پالیسیوں کی بدولت پیدا ہوئی ہے۔جنرل(ر)پرویز مشرف کے دور میں آئی ایم ایف اور ورلڈ بنک کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر بات کی جاتی تھی اور قرضوں کی بجائے تجارت کے مواقع کی بات کی جاتی تھی۔یہی وجہ تھی کہ پاکستان ،بھوٹان جیسے ممالک کی مالی امداد کیاکرتا تھا مگر اب یہ افسوسناک صورتحال پیدا ہوچکی ہے کہ پاکستان اکانومی کے اعتبار سے بھوٹان سے بھی کم تر سطح پر ہے۔حکمرانوں کو چاہئیے کہ بھاری قرضے لینے کی بجائے سابق صدر پرویز مشرف کی طرح تجارت کے مواقع تلاش کرے جس سے ملک میں حقیقی معاشی استحکام آئے۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -