چشتیاں ،ملزمان نے کپاس فروخت کرنیکا جھانسہ دیکر دو افراد کو موت کے گھاٹ اتار دیا

چشتیاں ،ملزمان نے کپاس فروخت کرنیکا جھانسہ دیکر دو افراد کو موت کے گھاٹ اتار ...

  

چشتیاں(نمائندہ پاکستان) دو نامعلوم موٹر سائیکل سوار ملزمان نے کپاس فروخت کرنے کا جھانسہ دے کر ساتھ لے جاکر ایک ریڑھی بان اشرف مسیح کو اسلحہ سے فائرنگ کرکے موت کے گھاٹ اتار دیا جس کی نعش سوڈھا مائنر ماڑی ڈوق شاہ کے قریب سے ملی جبکہ دوسرے شخص طارق جاوید مسیح کی نعش کئی گھنٹوں بعد چک نمبر119مراد کی نہر سے برآمد ہوئی ۔ کپاس کے بیوپاری طارق مسیح کو اغواء کرلیا ۔واقعات کے مطابق ریٹائرڈ بلدیہ ملازم مقتول گدھا گاڑی چلاتا تھا ۔ وقوعہ کے وقت مقتول مغوی کے پاس کپاس کی لوڈ ریہڑھی لے کر کھڑا تھا کہ ملزمان آئے اور کپاس فروخت کرنے کے بہانہ مغوی کو ساتھ لے گئے جبکہ جاتے وقت مغوی نے مقتول کو دس ہزار دے کر وہاں بٹھادیا اور ان کے ساتھ چلا گیا ۔ کچھ دیر بعد ایک ملزم مغوی کے موٹر سائیکل پر واپس آیا اور کہا کہ کپاس کی رقم کم پڑ گئی ہے ۔ جس پر مقتول اس کے ساتھ روانہ ہوگیا ۔ کافی دیر بعد جب وہ واپس نہ آئے تو تلاش شروع کی تومقتول اشرف مسیح کی نعش مذکورہ جگہ سے ملی ادھر مقتولین کے ورثاء نے چوک فوارہ میں احتجاج کیا اور روڈ بلاک کرکے ہر قسم کی ٹریفک جام کردی جس پر صوبائی اسمبلی کے ممبر ، انجمن تاجران کے صدر حاجی حمید احمد صدیقی ، عہدیدار نسیم صادق اوڑیا ، شیخ بشیر احمد چاولہ ، شفیق انصاری وہاں پہنچ گئے ۔ جن کی یقین دہانی پر احتجاج ختم کردیا اور سٹی پولیس نے مقتولین کے ورثاء کی رپورٹ پر مقدمہ درج کرکے ملزمان کی تلاش شروع کردی ۔

مزید :

کراچی صفحہ آخر -