اقتدار امانٹ، عوام حکمران کیخلاف اٹھ کھٹے ہوئے تو انہیں کہیں پناہ نہیں ملے گی: سراج الحق

اقتدار امانٹ، عوام حکمران کیخلاف اٹھ کھٹے ہوئے تو انہیں کہیں پناہ نہیں ملے ...

  

ملتان، ٹھٹھہ صاد ق آباد، جہانیاں، چوک میتلا، خانیوال( نیوز رپورٹر، نمائندہ پاکستان، نامہ نگار) امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ غریبوں کا خون چوس کر اپنے چہرے سرخ کرنے والے حکمران بھول گئے ہیں کہ اقتدار عوام کی امانت ہوتاہے ، اگر عوام حکمرانوں کے خلاف اٹھ کھڑے ہوئے تو انہیں کسی جگہ پناہ نہیں ملے گی ۔ لاکھوں کسان اور مزدور اس ظالمانہ اور استحصالی نظام کے خلاف متحد ہو چکے ہیں ۔ اس سے پہلے کہ وہ حکمرانوں کے محلوں اور کارخانوں کا محاصرہ کر لیں ان کے مطالبات تسلیم کرتے ہوئے انہیں بھی باعزت زندگی گزارنے کی سہولتیں مہیا کی جائیں ۔ انگریز کے دور سے اپنا خون پسینہ ایک کر کے زمینیں آباد کرنے والوں کو آج تک مالکانہ حقوق نہیں دیے گئے ۔ بھارت سے آلو پیاز اور ٹماٹر کی تجارت کرنے والے حکمران اپنے کسانوں کو کھیتی باڑی کی بنیادی ضروریات بھی دینے کو تیار نہیں۔ کھاد ، بیج ، زرعی ادویات اور بجلی و ڈیزل پر اٹھنے والا خرچ فصل کی قیمت سے بھی زیادہ ہوچکاہے ۔ کسان کے پیداواری اخراجات کئی گنا بڑھ چکے ہیں جبکہ حکمران زرعی اجناس کی قیمتیں بڑھانے کو تیار نہیں ۔ بیرون ملک سے سالانہ 12 ارب روپے کی سبزیاں اور ٹماٹر درآمد کی جاتی ہیں اگریہی بارہ ارب روپے کسانوں کی فلاح و بہبود پر خرچ کیے جائیں تو ہم سالانہ بیسیوں ارب روپے کی سبزیاں اور زرعی اجناس برآمد کر سکتے ہیں ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے کسان راج تحریک کے زیر اہتمام بڑے عوامی جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ جلسہ سے نائب امیر جماعت اسلامی پنجاب چوہدری عزیر لطیف ، صادق خان خاکوانی ، ملک رمضان روہاڑی اور ارسلان خاکوانی نے بھی خطاب کیا ۔ سراج الحق نے کے سودی نظام کے بارے میں سپریم کورٹ کے جسٹس کے ریمارکس پر تبصرہ کرتے ہوئے کہاکہ سودی نظام اسلام اورآئین پاکستان کے خلاف ہے ۔ آئین پاکستان کا تقاضا ہے کہ سودی کا نظام کاخاتمہ ہو ۔ آئین میں پاکستان کو اسلامی جمہوریہ اور قرآن و سنت کو ملک کا سپریم لاء تسلیم کیا گیاہے اور آئین پابند کرتاہے کہ یہاں کوئی قانون قرآن و سنت کے منافی نہ بنایا جائے ۔ سراج الحق نے کہاکہ ملکی اقتدار پر مسلط سرمایہ دار اور جاگیردار کسانوں کو محروم اور محکوم رکھناچاہتے ہیں ۔ظالمانہ نظام کی وجہ سے انسان تو انسان جانور بھی پریشان ہیں۔ سرمایہ دار اور جاگیردار لوگ بار بار پارٹیاں اور جھنڈے بدل کر اقتدار کے ایوانوں میں پہنچ جاتے ہیں اور وہاں بیٹھ کر اپنی فیکٹریوں اور جاگیروں کو بڑھانے کی منصوبہ بندی کرتے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ قومی خزانے کو چوسنے والی ان جونکوں کا مقصد صرف پیسہ کماناہے ۔ انہوں نے کہاکہ پاکستانی کسانوں کو بھی ہندوستانی کسانوں کے مطابق مراعات دی جائیں ۔ سراج الحق نے کسانوں پر زور دیا کہ وہ کوکا کولا اورپیپسی چھوڑ کر دودھ ، لسی اور مکھن کو اپنائیں اور اپنی تہذیب و تمدن میں جینے کا سلیقہ سیکھیں ، استعمار نے ہماری صحت بخش چیزوں کو چھین کر مضر صحت اشیا ہمارے حوالے کردی ہیں۔ انہوں نے کہاکہ تمام مسائل کا حل اللہ کے احکامات اور شریعت محمدیؐ کے نفاذ میں ہے ۔ کسان اور مزدور نظام مصطفےٰؐ کے نفاذ میں ہمارا ساتھ دیں ۔ دریں اثناء انہوں نے کہا ہے کہ68سالو ں سے پا کستان کی عوام کو بنیادی سہولتوں سے محروم رکھاجارہا ہے، میں بھی اس بوسیدہ ملکی نظام کا باغی ہوں، جس میں انصاف نہیں یکساں نظام تعلیم نہیں، سود نس نس میں سمایا ہواہے،امیر امیر تر ہوتا جارہا ہے اور غریب کو ایک وقت کا کھانا بھی میسر نہیں،یکساں نظام تعلیم،سود سے پاک معیشت ،جما عت اسلامی کے سلو گن اسلامی پا کستان خو شحا ل پا کستان میں شہر یو ں کو تعلیم صحت کسان کو اس کی فصل کی مکمل قیمت دینا ہے تاکہ برابری کی سطح پران کا حق مل سکے ،ان خیالات کا اظہار انہوں نے جماعت اسلامی کے زیر اہتمام کسان راج تحریک ریلی کی جہانیا ں آمدکے موقع پر ریلی کے شرکاء،کارکنوں ،کسانوں سے خطاب کرتے ہوئے کیا،انہوں نے کہا کہ کسا ن راج تحریک ریلی کا مقصد غریب کسانو ں کو خو شحال کر نا ہے، انہوں نے کہا کہ ملک سے جب تک سودی نظام ختم نہیں کیا جا تا تب تک ملک تر قی کی راہ پر گا مز ن نہیں ہو سکتا ، اسلامی نظا م سے معاشر ے کے ہر طبقے کو اس کا مکمل حق دیا جا ئے گا، جس سے ملک اور کسان خو شحا ل ہو سکتا ہے۔ اس موقع پر جنرل سیکرٹری لیاقت خان بلوچ،صد ر کسان بورڈ صادق خاکوانی نے بھی خطاب کیا،قبل ازیں جہانیاں آمد پر امیر جماعت اسلامی خانیوال ڈاکٹر عمران فاروق ،سابق امیر ہارون الرشید نظامی کارکنوں کی طرف سے ان کے اعزاز میں عشائیہ بھی دیا گیا۔ انہوں نے کہاکہ نے کہا ہے کہ لاہور میں پی ٹی آئی کی حمایت کا فیصلہ جماعت اسلامی کی مقامی قیادت نے کیا ہے، حکومت کا کوئی ایجنڈہ نہیں ہے نواز شریف ذاتی ایجنڈے پر کام کررہے ہیں ،قرض اتاروں ملک سنواروکی رقم اور سونا حکمرانوں نے غائب کر دیا ،سپریم کورٹ کا دروازہ سونے کی چابی سے کھلتا ہے غریب کیلئے انصاف کا حصول خواب ہے، اسلامی ممالک میں انتشار اور شورش اسلام دشمنوں کی سازشیں ہیں، قادیانی ملک کے موجودہ آئین کو ختم کرنے کے درپے ہیں۔انہوں نے ان خیالات کا اظہار جہانیاں میں عشائیہ کے شرکاء اوردفتر جماعت اسلامی میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ پاکستانی حکومت کی کوئی منزل ہے اور نہ ہی کوئی ایجنڈہ ہے نواز شریف اپنے ذاتی ایجنڈے پر کام کررہے ہیں سارا نظام ورلڈ بینک ااور آئی ایم ایف کے تحت چل رہا ہے میں نے وزیر اعظم میاں نواز شریف سے مدینہ منورہ میں کہا تھا کہ سودی نظام کے خاتمے کے بغیر ملک ترقی نہیں کر سکتا ہے لیکن آج آپ دیکھ لیں حکمران مغل شہزادوں کی سی زندگی بسر کرتے ہیں امراء کے کتے مزے کرتے ہیں مگر غریب عوام اپنے رزق کیلئے گردے تک فروخت کرنے پر مجبور ہیں ہم اس نظام کے باغی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ لاہور میں تحریک انصاف کی حمایت کا فیصلہ جماعت اسلامی کی مقامی قیادت کا ہے اس ایک سیٹ کی ہار جیت سے ملک میں کوئی انقلاب نہیں آجائے گا۔انہوں نے کہا کہ ملک کو آئی ایم ایف کے پاس گروی رکھوا دیا گیا ہے قرضوں پر قرضے لیے جاتے ہیں حکومت بتائے کہ جب قرض اتاروں ملک سنواروں کے تحت عوام نے جو رقم اور سونا دیا تھا وہ کہاں گیا ؟ شام،عراق،یمن،افغانستان،فلسطین،کشمیر،چیچنیا،شیشان سمیت دیگر علاقوں میں خانی جنگی،انتشار اور شورش کے پیچھے اسلام دشمنوں کو ہی ہاتھ ہے۔انہوں نے کہا کہ مدینہ منوری کے بعد پاکستان واحد اسلامی ملک ہے جو کہ کلمہ کی بنیاد پر قائم ہوا جس کیلئے ہجرت کی گئی لیکن عالمی طاقتوں نے ایسی سازشیں کیں کہ اسے ہمارے ملک میں آمریت اور منافقت کی حکومت تو قبول ہے۔انہوں نے کہا کہ حکومت کے تمام وعدے کاغذی ثابت ہوئے لوڈ شیڈنگ کے کاتمے کا وعدہ کیا تھا اس میں زیادہ اضافہ ہو گیا بے روزگاری کے خاتمے کاوعدہ کیا گیا تھا نوجوان اپنی ڈگریاں جلانے پر مجبور ہیں ۔انہوں نے کہا کہ موجودہ الیکشن کمیشن کی موجودگی میں2018ء کے الیکشن بھی متنازع ہوں گے۔انہوں نے کہا کہ ہم کرپشن کا خاتمہ چاہتے ہیں لیکن کرپشن کا خاتمہ کلین ہاتھ ہی کر سکتے ہیں ۔اس موقع پرجماعت اسلامی کے ذمہ داران چوہدری عزیر لطیف ،ہارون الرشید نظامی،ڈاکٹر عمران فاروق،چوہدری سعید اقبال،ضلعی صدر مسلم لیگ ن راؤ سعادت علی خان،عبدالخالق خاکی،چوہدری طاہر رندھاوا،شفیق خاور ،لطیف خان خٹک،نظام اللہ خان پاندہ،عابدخان،عبدالرحمن اوٹھی،چوہدری حبیب اللہ وڑائچ،رانا ایوب،عبدالرحمن سلفی،اقبال حنیف،مسعود نظامی،سلیم غوری،اسلم احساس،سعید قبال گورایہ،چوہدری جمشید احمد،حاجی سلیم طارق،حاجی نذیر احمد ،ارشد جاوید ایڈووکیٹ،آصف خاکی،خالد محمود بھٹی،محمد عارف سعید،حسین خالد جوئیہ،حافظ وسیم الغنی،حاجی عبدالواجدسمیت سیاسی و سماجی شخصیات بھی موجود تھیں۔ کسان راج دھرنے کے سلسلے میں امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے چوک میتلامیں کسان راج دفتر کا افتتاح کیا اور مختصرخطاب میں انہوں نے کہاکہ نسل درنسل سرکاری مزارعین وپٹے دارین کوحق ملکیت دیاجائے جنرل سیلزٹیکس اور زرعی انکم ٹیکس کاخاتمہ کیا جائے امدادی قیمت کپاس،گنا،دھان ،مکئی ودیگر کی قیمت میں اضافہ کیاجائے۔ اس موقع پر سینئرعہدیدار مصباح اللہ ترین، صفدرعباس خان منیس، نظام اللہ خان پاندہ ایڈووکیٹ، وحید چیمہ، یاسین کمبوہ ہارشاد خان کچھی، ریاض میتلا ودیگر کسان موجود تھے۔ پاکستان جماعت اسلامی کے امیر سراج الحق جب خانیوال پہنچے تو سینکڑوں کارکنوں اور کسانو ں نے انکا شاندار استقبال کیا ۔ سراج الحق نے نیازی چوک سے خانیوال ٹول پلازہ تک پیدل ریلی میں شرکت کی اور ریلی کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کسانوں مزدوروں اور محروم افراد کے لئے لڑنا مقدس جہاد ہے۔ جماعت اسلامی کے سربراہ مولانا سراج الحق گزشتہ روم جب خانیوال پہنچے تو انہو ں نے طارق آباد میں مسجد احسن میں ظہر کی نماز ادا کی وہ اس موقع پر نمازیوں میں گھل مل گئے اور ان سے خیریت دریافت کی جماعت کے ضلعی عہدیدار فرخ رحمان کمبوہ ہمراہ تھے ۔

مزید :

ملتان صفحہ اول -