نندی پور پاور پراجیکٹ کا آڈٹ ایشین بینک سے کرایا جائے :عمران خان

نندی پور پاور پراجیکٹ کا آڈٹ ایشین بینک سے کرایا جائے :عمران خان
نندی پور پاور پراجیکٹ کا آڈٹ ایشین بینک سے کرایا جائے :عمران خان

  

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک )پاکستان تحریک انصاف کے چیئر مین عمران خان نے مطالبہ کیا ہے کہ نندی پور پاور پراجیکٹ منصوبے کا آڈٹ ایشین ڈیویلپمنٹ بینک سے کرایا جائے ۔ان کا کہنا تھا کہ نندی پور پاور پر اجیکٹ کا تخمینہ 22ارب روپے لگا یا گیا تھا تو پھر کیسے 84ارب تک پہنچ گیا جس کے با وجو د پراجیکٹ نہ چل سکا ۔نندی پور پراجیکٹ کا درست آڈٹ نہیں کیا جا رہا ہے ۔عمر ان خان نے مطا لبہ کیا کہ نندی پور پراجیکٹ کا آڈٹ ایشین بینک سے کرایا جائے ۔

لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ عام انتخابات سے قبل شہباز شریف نے کہا کہ چھ مہینے میں لوڈ شیڈنگ کا خاتمہ کردیں گے جس پر نواز شریف آگے آئے اور کہا کہ چھ مہینے نہیں بلکہ 2017میں لوڈ شیڈنگ ختم ہو گی ۔نیپر ا کی رپورٹ کے مطابق 2020تک لوڈ شیڈنگ ختم نہیںہو سکتی ۔انہوں نے کہا کہ آڈیٹر جنرل کی رپورٹ کے مطابق واپڈا کو بے ضابطگیوں کی مد میں 980ارب روپے کا نقصان ہوا اور نیپر ا کی رپورٹ کے مطابق پاکستانی شہریوں کو ستر فیصد اضافی بل بھیجے گئے ۔انہوںنے کہا کہ رپورٹ کے مطابق ڈسٹر ی بیوشن کمپنیوں نے بیس ارب کا جو نقصان اپنی نا اہلی سے کیا تھا وہ بھی شہریوں پر ڈال دیا گیا ہے ۔نیلم جہلم پراجیکٹ میں جتنی تاخیر ہو گی اس سے سالانہ پچاس ارب روپے کا نقصان ہو گا ۔حکومت نے یہ نقصان بھی شہریوں کو بلوں کے ذریعے ادا کرنے پر مجبور کردیا ہے ۔عمران خان کاکہنا تھا کہ ایل این جی درآمدی منصوبے جتنا بڑا اور اہم ہے اسے عوام سے کیوں چھپا یا جا رہا ہے ۔اس منصوبے میں اربوں ڈالر سالانہ خرچ ہو گا لیکن ابھی تک حکومت نے اس کی قیمت لوگوں کے سامنے نہیںرکھی ۔اس پراجیکٹ کو خفیہ رکھنے کا مقصد کرپشن ہے ۔انہوں نے کہا کہ جنرل مشرف کے دور میں سرکلر ڈیٹ 200ارب تھا جو پیپلز پارٹی کے دور میں بڑھ کر 480ارب روپے ہو گیا ۔اس حکومت نے آکر پتہ نہیں کس طرح سرکلر ڈیٹ ختم کیا اس کے بعد اب سرکلر ڈیٹ 600ارب تک پہنچ گیا ہے ۔سٹیل ملز کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ 2008میں سٹیل ملز آٹھ ارب روپے منافع میں تھی اور اس کی کیپسٹی 74فیصد تھی ۔پیپلز پارٹی کی حکومت ختم ہوئی تو سٹیل ملز کو ساٹھ ارب روپے نقصان پر چھو ڑ کر گئی جبکہ اس کی کیپسٹی صرف 14فیصد رہ گئی ۔اس حکومت نے سٹیل ملز کو بند کردیا جبکہ شریف خاندان کی اپنی سٹیل ملز سعودی عرب میں منافع کما رہی ہے ۔ان کا کہنا تھا کہ میاں نواز شریف پاکستان کے تیسرے بڑے امیر شخص ہیں جن کے پاس 140ارب روپے کی جائیداد ہے لیکن پاکستان میں ٹاپ ٹین ٹیکس دینے والوں میں ان کا نام ہی نہیں ہے۔عمران خان نے کہا کہ ریمنڈ بیکر نے اپنی کتاب میں لکھا ہے کہ نواز شریف نے گزشتہ دو ادوار میں 42ارب روپے کی کرپشن کی ۔1989کی آڈیٹر جنرل کی رپورٹ کے مطابق نواز شریف نے وزارت اعلیٰ کے عہدے پر کرپشن کی وجہ سے 35ارب روپے کا نقصان پہنچا یا ۔اس زمانے میں نوازشریف نے ایل ڈی اے سے تین ہزار پلاٹس لے کر لوگوں کو بانٹیں اور اپنی جماعت کو مضبوط کیا ۔

مزید :

قومی -