نیب نادانستہ نادہندگان کے خلاف کارروائی نہیں کرسکتا ،ہائی کورٹ

نیب نادانستہ نادہندگان کے خلاف کارروائی نہیں کرسکتا ،ہائی کورٹ
 نیب نادانستہ نادہندگان کے خلاف کارروائی نہیں کرسکتا ،ہائی کورٹ

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے نیب کو 12کروڑ روپے سے زائد رقم کے مبینہ بینک نادہندہ دو کاروباری شخصیات احمد ہمایوں اور احسن ہمایوں کے خلاف ف کارروائی سے روک دیا،مسٹر جسٹس محمود مقبول باجوہ کی سربراہی میں قائم ڈویژن بنچ نے اس کیس کی مزید سماعت کے لئے چیف جسٹس سے فل بنچ تشکیل دینے کی سفارش بھی کردی ہے ۔فاضل بنچ نے قرار دیا کہ نیب صرف دانستہ نادہندگان کے خلاف ہی کارروائی کا مجاز ہے اس امر کا فیصلہ ہونا چاہیے کہ نادانستہ نادہندگان کے خلاف نیب کیوں کر کارروائی جاری رکھ سکتا ہے ۔درخواست گزاروں کی طرف سے عدالت میں موقف اختیار کیا گیا کہ انہوں نے سٹاک مارکیٹ میں سرمایہ کاری کیلئے پنجاب بنک سے قرضہ لیا ، اس قرضے کو سود سمیت واپس کیا جا چکا ہے،قرضہ کے تنازع کے حوالے سے دعوی بھی لاہور ہائیکورٹ میں زیر التواءہے، انہوں نے مزید موقف اختیار کیا کہ پنجاب بینک کی شکایت پر نیب نے درخواست گزاروں کے خلاف کارروائی شروع کر دی ہے اور انہیں طلبی کے نوٹسز بھجوائے جا رہے ہیں جبکہ سٹیٹ بینک بھی درخواست گزاروں کے اکاﺅنٹس کی چھان بین کر رہا ہے ، انہوں نے استدعاکہ دعوی کے فیصلے تک نیب کو کارروائی سے روکا جائے، عدالت نے احمد ہمایوں اور احسن ہمایوں کے خلاف نیب کو کارروائی سے روکتے ہوئے دانستہ یا نادانستہ نادہندگی کا تنازع طے کرنے کیلئے درخواستیں فل بنچ کو بھجوا دیں، اس نکتہ پر 100سے زیادہ درخواستیں دائر ہوچکی ہیں جن کی سماعت کے لئے فل بنچ تشکیل دیا جائے گا۔

مزید :

لاہور -