کرک ،ترقیاتی فنڈز کی منظوری کا معاملہ دیوانی مقدمہ میں تبدیل

کرک ،ترقیاتی فنڈز کی منظوری کا معاملہ دیوانی مقدمہ میں تبدیل

کرک(بیورورپورٹ) ضلعی کونسل کے سالانہ ترقیاتی فنڈکی منظوری کامعاملہ دیوانی مقدمے میں تبدیل، جمعہ کے روز بھی فیصلہ نہ ہوسکا، قائم کمیٹی نے اجلاس پیر کے روز دوبارہ طلب کرلیا، تفصیلات کیمطابق متنازعہ ضلعی سالانہ ترقیاتی فنڈز 40 کروڑ 2016-17 اور 17-18 کی 21 یونین کونسلوں میں تقسیم مسئلہ کشمیر بن گیا، اس حوالے سے وزیراعلیٰ کے پی کے کی طرف سے قائم کردہ صوبائی وزیر بلدیات عنایت اللہ، صوبائی وزیر تعلیم ،عاطف خان ، صوبائی وزیر مال علی امین گنڈا پور، سیکرٹری بلدیات سیکرٹری منصوبہ بندی اور ترقی پر مشتمل کمیٹی جمعہ کے روز اجلاس کی تفصیلات گذشتہ روز سامنے آگئی میڈیا ذرائع کیمطابق متذکرہ کمیٹی نے ضلعی ناظم ڈاکٹر عمر دراز خٹک ، ضلع نائب ناظم سجاد بارکوال اور ڈسٹرکٹ کونسلر مولانا میر زاقیم کے بیانات اور انکے تحفظات سننے، تشکیل کردہ کمیٹی نے اجلاس پیر کے روز دوبارہ طلب کرلیا میڈیا ذرائع کیمطابق پیر کے روز حتمی فیصلے کے قوی امکان ہے، ذرائع نے یہ بھی انکشاف کیا ہے کہ کمیٹی 21 یونین کونسلوں میں مساوی بنیاد پر فنڈز تقسیم کا فیصلہ کریگی ، واضح رہے ضلعی سالانہ ترقیاتی فنڈز منصوبہ بندی اور ترقی ڈیپارٹمنٹ میں نظر ثانی کیلئے زیر تجویز ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...