8اکتوبر 2005 کے زلزلے کو12برس بیت گئے ،مظفر آباد سمیت ملک بھر میں دعائیہ تقریبات

8اکتوبر 2005 کے زلزلے کو12برس بیت گئے ،مظفر آباد سمیت ملک بھر میں دعائیہ تقریبات
8اکتوبر 2005 کے زلزلے کو12برس بیت گئے ،مظفر آباد سمیت ملک بھر میں دعائیہ تقریبات

  


مظفرآباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)8اکتوبر 2005 کے زلزلے کو12برس بیت گئے،مظفر آباد،بالاکوٹ،میرپور،نکیال،اسلام آباد سمیت ملک بھر میں شہدا زلزلہ کی یاد میں تقریبات کا انعقاد کیا گیا جن میں سیاسی شخصیات سمیت متاثرین زلزلہ ،طلبااور شہریوں کی بڑی تعداد میں شرکت کی،اس موقع پرشہدا کیلئے خصوصی دعائیں بھی مانگی گئیں۔

شہدا زلزلہ کی یاد میں بڑی تقریب مظفرآباد میں ہوئی جس میں اعلیٰ عسکری وسول حکام اور شہریوں نے شرکت کی،شہداکی یاد میں سائرن بجائے گئے اورایک منٹ کی خاموشی اختیارکی گئی،قائم مقام وزیراعظم آزادکشمیر  راجانثارنے یادگارشہداپرپھول چڑھائے،پولیس کے چاق و چوبند دستے نے یادگار شہدا پر سلامی پیش کی ۔اسلام آباد میں بھی شہدا زلزلہ کیلئے دعائیہ تقریبات کا اہتمام کیا گیا، تقریب کا اہتمام مارگلہ ٹاورز کے قریب یادگار شہدا پر کیا گیا ،تقریب میں این ڈی ایم اے کے اہلکاروں اور شہریوں کی بڑی تعداد میں شریک ہوئی اس موقع پر یاد گارشہدا پرپھول چڑھائے گئے اور فاتحہ خوانی کی گئی ۔

میرپورآزادکشمیر میں بھی زلزلے کے شہداکوخراج عقیدت پیش کرنے کیلئے واک اوردعائیہ تقریب منعقد کی گئی ،واک قائداعظم چوک سے شروع ہوکراسی مقام پرختم ہوئی ،واک میں مختلف سکولوں کے بچوں اورسول سوسائٹی کے ارکان نے شرکت کی،ادھر نکیال میں 8بجکر55منٹ پرسائرن بجاکرتقریبات کاآغازہوا ،مرکزی تقریب کا انعقاد کمیونٹی ہال نکیال میں ہوئی،شہدا زلزلہ کےلئے مساجد میں اجتماعی دعا بھی کی گئی،تحصیل انتظامیہ،انجمن تاجران،سول سوسائٹی نے پڑاوہ چوک سے میلادچوک تک واک کی۔

8اکتوبرکے زلزلے سے آزادکشمیرکے5اضلاع بری طرح متاثرہوئے تھے،زلزلے سے مظفرآباد، باغ،راولاکوٹ میں بڑے پیمانے پر تباہی ہوئی تھی جس میں 3 لاکھ سے زائد مکانات تباہ ہوئے تھے،تعمیرنوکے7835 منصوبوں میں سے2442 منصوبے تکمیل کے منتظرہیں،زلزلے کے دوران سکولوں کی عمارتیں گرنے سے18ہزارسے زائدبچے شہیدہوئے تھے،آزادکشمیرمیں مجموعی طورپر2800 کے قریب سرکاری تعلیمی ادارے تباہ ہوئے،گورنمنٹ ہائی سکول بالاکوٹ میں 8 اکتوبر کے زلزلے میں 63 طلبہ جاں بحق ہوئے تھے۔زلزلے سے خیبرپختونخوامیں3ہزار700سکول تباہ ہوئے تھے،بارہ برس بیت جانے کے باوجودابھی تک تباہ ہونے والے ایک ہزار900سکول تاحال تعمیرنہیں کئے جاسکے۔

مزید : قومی /اہم خبریں


loading...