”دنیا کے آدھے مزدور بے روزگار ہونے والے ہیں“ خطرے کی گھنٹی بج گئی

”دنیا کے آدھے مزدور بے روزگار ہونے والے ہیں“ خطرے کی گھنٹی بج گئی
”دنیا کے آدھے مزدور بے روزگار ہونے والے ہیں“ خطرے کی گھنٹی بج گئی

  


نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) مصنوعی ذہانت کے حامل روبوٹس کے متعلق عالمی ماہرین کافی عرصے سے سنگین تحفظات کا اظہار کرتے آ رہے ہیں اور اب ایک امریکی ماہر علم نجوم نے بھی اس حوالے سے ایک خوفناک خبر سنا دی ہے کہ ہر انسان خوفزدہ رہ جائے۔ ڈیلی سٹار کے مطابق مارٹن فورڈ نامی اس ماہر علم نجوم نے بتایا ہے کہ بہت جلد مصنوعی ذہانت کے حامل روبوٹس ہر شعبہ ہائے زندگی پر حاوی ہو جائے گی اور آدھی سے زائد دنیا بے روزگار ہو جائے گی۔

مارٹن فورڈ کا کہنا تھا کہ ”یہ حالات کچھ زیادہ دور نہیں بلکہ آئندہ 10سے 20سال تک دنیا اس صورتحال سے دوچار ہونے والی ہے۔ یہ وہ وقت ہو گا جب انسان اپنے ہی بنائے ہوئے روبوٹس کے سامنے مجبور ہو جائے گا۔ یہ روبوٹس تمام شعبوں میں انسان ورکرز کی جگہ لے لیں گے اور انہیں بے روزگار کر دیں گے۔دنیا کی معیشت میں ایسی صلاحیت نہیں ہے کہ وہ فوری طور پر ایسی نوکریاں پیدا کر سکے جن پر ان بے روزگار ہونے والے اربوں انسانوں کو لگا سکے۔ چنانچہ انسانیت ایک ایسے بحران سے دوچار ہو جائے گی جس کا کوئی حل نہیں ہو گا۔“

مزید : بین الاقوامی


loading...