قانون کو ہاتھ میں لینے والا کتنا ہی طاقتوں رکیوں نہ ہو، اب بچ نہیں پائیگا: آئی جی پولیس 

قانون کو ہاتھ میں لینے والا کتنا ہی طاقتوں رکیوں نہ ہو، اب بچ نہیں پائیگا: ...

  

لاہور(کرائم رپورٹر)انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب انعام غنی نے کہاہے کہ چہلم حضرت امام حسین ؑ کے موقع پر صوبہ بھر میں حساس جلوسوں اور مجالس کی سیکیورٹی کیلئے جدید ٹیکنالوجی کے ساتھ ساتھ تمام دستیاب وسائل کوبروئے کار لایا جائے اور آر پی اوز، ڈی پی اوز خود فیلڈ میں نکل کر اے کیٹیگری کے جلسوسوں اور مجالس کے سیکیورٹی انتظامات کی انسپکشن کو یقینی بنائیں۔ مرکزی اور حساس جلوسوں اور مجالس کو ہر صورت فور لئیر سیکیورٹی فراہم کی جائے جبکہ جلوسوں کے روٹس پر واقع عمارتوں کی چھتوں پر سنائپرز جبکہ اندر سادہ لباس میں کمانڈوز کو لازمی تعینات کیا جائے تاکہ کسی بھی قسم کے خطرے کی بروقت پیش بندی کی جاسکے۔ معاشرے میں قانون کی حکمرانی کو برقرار رکھنا پولیس کی بنیادی ذمہ داری ہے چنانچہ امن و امان کو خراب کرنے والا یا قانون کو ہاتھ میں لینے والا کتنا ہی طاقتور کیوں نہ ہو، قانون شکنی پر اس کے مقام و مرتبے کا لحاظ کیے بغیر قانونی کارروائی میں تاخیر نہ کی جائے اور تمام اضلاع میں یہ پیغام نچلی سطح تک پہنچادیا جائے کہ نقص امن پیدا کرنے والا خواہ کتنا ہی طاقتور ہو قانون کی گرفت سے بچ نہ پائے۔علاوہ ازیں ڈی آئی جی آپریشنز اشفاق خان نے کہا ہے کہ لاہور پولیس چہلم حضرت امام حسین ؑمیں شرکت کرنے والے عزاداروں کو فول پروف سکیورٹی فراہم کرنے کے لئے مکمل تیارہے۔پولیس افسران منتظمین جلوس، کمیونٹی لیڈرز،ضلعی انتظامیہ اورمتعلقہ اداروں کے ساتھ مسلسل رابطہ میں ہیں۔ چہلم حضرت امام حسینؑ کے موقع پر شہر بھر میں ہونے والی مجالس اور عزاداری جلوسوں پر لاہور پولیس کے مجموعی طور پر 10 ہزار سے زائدافسران و اہلکار تعینات کئے گئے ہیں۔شہر بھرمیں سکیورٹی ہائی الرٹ رہے گی، تمام داخلی و خارجی راستوں پر گاڑیوں موٹر سائیکلوں اور مشکوک اشخاص کو سخت چیکنگ اور کلیرئنس کے بعد ہی شہر میں داخل ہونے کی اجازت دی جائے گی۔

آئی جی پولیس

مزید :

علاقائی -