ہراسانی معاملہ، طالبہ کنزہ نے ویڈیو بیان ریکارڈ کرادیا

ہراسانی معاملہ، طالبہ کنزہ نے ویڈیو بیان ریکارڈ کرادیا

  

لاہور(کرائم رپورٹر) تھانہ سندر کی حدود میں واقعہ نجی ہوٹل میں پولیس کی جانب سے طالبہ کو ہراساں کرنے کا معاملہ،کنزہ نامی خاتون نے اپنا ویڈیو بیان اور واقع کی سی سی ٹی وی فوٹیج افسران کو دکھا دی۔کنزہ طالبہ کا کہنا ہے کہ اس نے نجی ہوٹل میں قیام کیا ہوا تھا اچانک رات اڑھائی بجے کسی نے دروازہ زور زور سے کھٹکھٹایا، دو پولیس اہلکار تھے جو زبردستی کمرے میں گھس آئے اور بے معنی سوال کرنے لگے۔ پولیس اہلکاروں کے دس منٹ بعد ایک اور پولیس آفیسر اندر گھس آیا اور مجھے زبانی ہراساں کیا۔ تیسرا پولیس اہلکار خود کو انچارج ظاہر کرتے ہو ئے داخل ہوگیا۔خود کو پولیس ٹیم کا انچارج کہنے والا پولیس آفیسر مجھے غلیظ گالیاں دیتا رہا اور ہراساں کرتا رہا۔حکام بالا سے گزارش ہے جو پولیس اہلکاروافسران اس طرح کسی کی بہن اور بیٹی کو ہراساں کر رہے ہیں انکے خلاف ایکشن لیا جائے،ہوٹل میں میرے تمام شناختی دستاویزات جمع ہیں،آئی جی پنجاب انعام غنی نے لاہور کے نجی ہوٹل میں طالبہ کو ہراساں کرنے کے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے سی سی پی او لاہور سے واقعہ کی فوری رپورٹ طلب کرلی۔

مزید :

علاقائی -