نیسلے،زرعی یونیورسٹی کا فوڈ سائنس ٹیکنالوجی کے فروغ کیلئے معاہدہ

  نیسلے،زرعی یونیورسٹی کا فوڈ سائنس ٹیکنالوجی کے فروغ کیلئے معاہدہ

  

لاہور(پ ر)نیسلے پاکستان نے زرعی شعبے اور فوڈ سائنس ٹیکنالوجی کی ترقی اور استعداد کار میں اضافہ پر توجہ مرکوز کیلئے نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف فوڈ سائنس اینڈ ٹیکنالوجی، یونیورسٹی آف ایگرکلچر (NIFSAT-UAF) کے ساتھ شراکت داری قائم کی ہے۔ مفاہمت کی یادداشت (MoU)کے تحت نیسلے پاکستان اور NIFSAT لیبارٹری ٹیسٹوں کے طریقہ کار میں درستگی، خوراک کے تحفظ کے بارے میں آگاہی پروگرام اور تربیت کے حوالے سے مل کر کام کریں گے۔دونوں کمپنیاں خوراک کے حوالے سے معیارات کو ہم آہنگ کرنے کیلئے ریگولیٹری اتھارٹیز کو معاونت فراہم کرنے کے ساتھ ساتھ عام لوگوں میں دودھ کی کوالٹی اور  تحفظ کے بارے میں ان کی آگاہی مہم میں بھی اشتراک بھی کریں گے۔ یہ اقدام مطوبہ اہداف کے حصول کیلئے شراکت داری  قائم کرنے کے بارے میں اقوام متحدہ کے پائیدار ترقی کے اہداف (SDGs17) کے مطابق ہے۔اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے ثامر شدید، سی ای او، نیسلے پاکستان نے کہا”نیسلے پاکستان، موجودہ اور آنے والی نسلوں  کے معیار زندگی کو بہتر بنانے کیلئے اپنے غذائی قوت  کے فلسفے کے تحت خوراک اور فارم سیکٹر کی ترقی کیلئے کام کرنے پر یقین رکھتی ہے کیونکہ یہ دونوں شعبے پاکستان میں معاشی ترقی میں کافی اہمیت رکھتے ہیں۔ان مشترکہ اقدامات پر مل کر کام کرنے سے ہمارے اہداف کے حصول اور خوراک کے تحفظ اور خوراک کے معیار کو ہم آہنگ بنانے کیلئے  بہترین عالمی طریقہ کار پر عمل درآمد میں مدد ملے گی۔

پروفیسر ڈاکٹر آصف تنویر، وائس چانسلر یو اے ایف نے اس شراکت داری پر مسرت کا اظہار کرتے ہوئے کہا”ہم اس اقدام پر یقین کرنے پر نیسلے پاکستان کے شکر گزار ہیں۔ہم فارمنگ کے حوالے سے بہترین طریقہ کاروں پر عمل درآمد کو یقینی بناتے ہوئے  تربیت اور تحقیق پر مل کر کام کریں گے۔“زرعی خدمات نیسلے پاکستان کے فلسفے کا ایک لازمی حصہ ہے جو کسانوں کے معاشی سماجی حالات اور زریعہ معاش کو بہتر بنانے کیلئے کوشاں ہیں۔ نیسلے پاکستان زرعت اور ڈیری فارمنگ میں خاص مہارت رکھنے والی پیشہ وارانہ ماہرین پر مشتمل ٹیموں  کے ذریعے کسانوں کو ڈیری اور زرعت کے بارے میں جدید حل فراہم کرتا ہے۔یہ شراکت داری نچلی سطح سے خوراک، زراعت اور ڈیری سیکٹر کی بہتری کیلئے  خاص طور پرمختص کی گئی ہے۔دریں اثناء نیسلے پاکستان، کمپنی کے عالمی سطح کی پیکیجنگ میں پائیدار تبدیلی کے سفر کے تحت 2025تک اپنے پیکیجنگ میٹریل کو 100فیصد ری سائیکل یا دوبارہ استعمال کے قابل بنانے کا وژن رکھتا ہے اور اس بات کو یقینی بنایا جائے گا کہ کمپنی کا پیکیجنگ میٹریل بشمول پلاسٹک نہ تو زمینی گڑھوں میں اور نہ ہی سمندروں، جھیلوں اور دریاؤں میں پھینکا جائے۔

مزید :

کامرس -