ہمدرد کی جانب بارش متاثرہ علاقوں میں طبی کیمپس لگائے گئے

      ہمدرد کی جانب بارش متاثرہ علاقوں میں طبی کیمپس لگائے گئے

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر) ہمدرد فاؤنڈیشن پاکستان کے زیر اہتمام صوبہ سندھ میں مون سون کی معمولی بارشوں سے متاثر ہونے والے مختلف اضلاع کے لوگوں کے لئیسیلابی امدادی کیمپس لگائے گئے۔ مون سون کی بارشوں نے صوبے میں سیلابی صورت حال پیدا کردی ہے اور انفرااسٹرکچر بڑے پیمانے پر متاثر ہوا ہے۔ کئی اضلاع کے لوگ بخار، جلدی امراض، ٹائیفائڈ، ڈینگی اور کورونا سے متاثر ہوئے۔ صوبائی حکومت کی اپیل پر ہمدرد فاؤنڈیشن پاکستان کی صدر محترمہ سعدیہ راشد اور ڈائریکٹر جنرل فرخ امداد کی خصوصی ہدایات پر ہمدرد فاؤنڈیشن کے کارکنان نے ڈائریکٹر سید محمد ارسلان کے ذیر نگرانی مختلف اضلاع میں کل 90طبی کیمپس لگائے۔یہ سرگرمیاں مسلسل پندرہ دن تک جاری رہیں جس میں روزانہ مختلف علاقوں میں چھ کیمپس لگائے گئے۔ان کیمپس میں ماہر طبیب و حکما موجود تھے جنہوں نے لوگوں کا طبی معائنہ کیا اور مفت ادویات بھی  دیں۔ تقریبا دس ہزار سے زاٹد لوگوں کا مفت طبی معائنہ وعلاج کیا گیا۔ ایک اندازے کے مطابق صوبے بھر میں سیلابی صورتحال سے تقریبا دس لاکھ لوگ متاثر ہوئے ہیں۔ اس لیے منظم منصوبہ بندی کے تحت ان اضلاع میں کیمپس لگائے گئے جو بارشوں سے سب سے زیادہ متاثر ہوئے ہیں۔ کیمپس میں ایلوپیتھک اور یونانی ادویہ موجود تھیں جو مرض کی نوعیت دیکھتے ہوئے تجویز و تقسیم کی گئیں۔ اس مہم کے اغاز    پر صدر ہمدرد فاؤنڈیشن پاکستان محترمہ سعدیہ راشد نے کہا کہ خدمت خلق ہمدردکا بنیادی نصب العین  جس کا درس شہید حکیم محمد سعید ہمیشہ دیتے رہے اور عملی طور پراس پر کاربند رہے اور ان کے بعد اس کا سلسلہ تا ہنوز جاری و ساری ہے

مزید :

صفحہ آخر -