وزیر اعلیٰ کا غیر قانونی کان کنی اور معدنیات چوری، سڑک کی تعمیر میں بے قاعد گی کا نوٹس 

وزیر اعلیٰ کا غیر قانونی کان کنی اور معدنیات چوری، سڑک کی تعمیر میں بے قاعد ...

  

پشاور(سٹاف رپورٹر)وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے ضلع اورکزئی میں سڑک کی تعمیر کے منصوبے میں بے قاعدگی کا نوٹس لے لیا۔ وزیراعلیٰ کی ہدایت پر محکمہ مواصلات و تعمیرات کے چار افسروں اور اہلکاروں کو فوری طور پر معطل کر دیا گیا۔ ان افسران اور اہلکاروں میں محکمہ تعمیرات و مواصلات کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر شوکت اللہ، انجینئر عظمت اللہ، ایس ڈی او عباد اللہ اور سب انجینئر راج محمد شامل ہیں۔ معطلی کے بعد ان ہلکاروں کے خلاف مزید محکمانہ کاروائی کی جارہی ہے۔ ان اہلکاروں کو ضم شدہ ضلع اورکزئی میں غور گڑھ سڑک کی تعمیر اور بلیک ٹاپنگ کے منصوبے میں بے قاعدگی میں ملوث پایا گیا ہے۔ اس سلسلے میں یہاں سے جاری اپنے ایک بیان میں وزیراعلیٰ نے تمام تعمیراتی محکموں کے معاملات میں شفافیت کو ہر لحاظ سے یقینی بنانے کے عزم کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ عوامی فلاح و بہبود کے منصوبوں میں کسی بھی قسم کی بے قاعدگی کو کسی صورت برداشت نہیں کیا جائے گا۔ ترقیاتی منصوبوں سے متعلق معاملات پر کڑی نظر رکھی جائے گی، ان منصوبوں کے مقدار اور معیار پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گااور بے قاعدگیوں میں ملوث اہلکاروں کو نشان عبرت بنایا جائے گا۔ اُنہوں نے کہاکہ بدعنوانی کا خاتمہ پاکستان تحریک انصاف حکومت کے ایجنڈے میں سرفہرست ہے۔ کسی بھی سطح پر بدعنوانی اور بے قاعدگی برداشت نہیں اور ایسی سرگرمیوں میں ملوث سرکاری اہلکاروں کیلئے اس حکومت میں کوئی جگہ نہیں۔ 

پشاور(سٹاف رپورٹر)وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے صوبے کے بعض علاقوں میں غیر قانونی کان کنی اور معدنیات کی چوری کے واقعات کا سختی سے نوٹس لیتے ہوئے تمام اضلاع کی انتظامیہ کو ایسی غیر قانونی سرگرمیوں میں ملوث عناصر کے خلاف کاروائیاں تیز کرنے کی ہدایت کی ہے۔ وزیراعلیٰ کی خصوصی ہدایت کی روشنی میں ضلع نوشہرہ اور صوابی کی ضلعی انتظامیہ اور پولیس نے گزشتہ رات غیر قانونی کان کنی اور معدنیات کی چوری میں ملوث عناصر کے خلاف مشترکہ کاروائیاں کرتے ہوئے متعدد افراد کو رنگے ہاتھوں گرفتار کر لیا۔ تفصیلات کے مطابق ان کاروائیوں کے دوران ضلع نوشہرہ میں 12 جبکہ ضلع صوابی میں 16 افراد کو گرفتار کر لیا گیا۔گرفتار افراد کے خلاف مائننگ قوانین کے مطابق مقدمات درج کرکے اُنہیں جیل منتقل کر دیا گیا جبکہ اُن سے ٹرکس، ٹریکٹر ٹرالیاں اور دیگر چیزیں قبضے میں لی گئی ہیں۔وزیراعلی ٰنے تمام اضلاع کی انتظامیہ کو غیر قانونی کان کنی میں ملوث عناصر کے خلاف کاروائیاں تیز کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہاکہ عوامی وسائل کو نقصان پہچانے والے اور حکومت کی بد نامی کا باعث بننے والے مافیا کے ساتھ آہنی ہاتھوں سے نمٹا جائے گا اور اُنہیں قانون کے مطابق سخت سزادی جائے گی۔ معدنیات کو عوام کی امانت قرار دیتے ہوئے وزیراعلیٰ نے کہاکہ حکومت ان وسائل کے تحفظ کیلئے ہر ممکن اقدامات کر ے گی۔ 

مزید :

صفحہ اول -