ایبٹ آباد 8 اکتوبر زلزلہ، پندرہویں برسی آج منائی جائیگی

ایبٹ آباد 8 اکتوبر زلزلہ، پندرہویں برسی آج منائی جائیگی

  

ایبٹ آباد(بیورورپورٹ)8اکتوبر 2005 میں ہولناک عذاب الہی کو بیتے پندرہ سال ہو گئے زلزلہ سے میں ہونے والی تباہ اور جاں بحق افراد کی پندرہویں برسی آج منائی جائے گی تفصیلات کے مطابق آج سے ٹھیک پندرہ سال قبل 8 اکتوبر 2005 صبح 8 بج کر پانچ منٹ پر ہری پور ایبٹ آباد مانسہرہ شمالی علاقہ جات بالاکوٹ مظفرآباد کی بھٹکی ہوئی عوام کو راہ راست پر لانے کے لئے اللہ تعالی نے 7.2 کی شدت کا زلزلہ عذاب الہی کے طور پر نازل کیا جس نے ان علاقہ جات میں بنی خوبصورت دس دس منزلہ عمارتیں،پہاڑ ودیگر اشیا زمین بوس کر دی اور لاکھوں کی تعداد میں نامی گرامی خاندانوں  کے لوگ  موت کی نیند میں سو گئے تھے جس کے بعد دنیا بھر کے ممالک نے پاکستان کی امداد کے لیے یہاں کا رخ کیا اور متاثرہ خاندانوں کو کھانے پینے کی اشیا سمیت رہائش کے لیے مناسب دیگر انتظامات فوری طور مہیا کیے اور ان علاقوں میں دوبارہ انسانی زندگی بحال کرنے کے لیے حکومت پاکستان کی جانب سے دیگر ممالک کے ساتھ مل کر  مختلف کمپنیوں کے ہمراہ کی پروجیکٹ شروع کیے اور تباہ شدہ علاقوں میں دوبارہ عمارتیں اور ضروریات زندگی کی تمام اشیا مہیا کر کے ان علاقوں کو دوبارہ بحال کر دیا جہاں پندرہ سال گزر جانے کے بعد دوبارہ رونقیں بحال نظر آ رہی ہیں مگر پندرہ سال قبل ہونے والے زلزلے میں متاثرہ خاندانوں کے ساتھ غیر ملکی عوام سمیت پاکستانی عوام دکھ میں برابر کی شریک ہے زلزلہ میں جاں بحق ہونے والے افراد کو کسی صورت بھلایا نہیں جا سکتا یہی وجہ ہے کہ پندرہ برس گزر جانے کے بعد بھی پوری پاکستانی قوم ان لاکھوں ہزاروں افراد کی یاد میں 15 ویں برسی عقیدت و احترام کے ساتھ آج منائیں گے ملک بھر میں سرکاری طور پر بھی تقریبات کا انعقاد کیا جائے گا۔

مزید :

صفحہ اول -