”پولیس میں بھی کورٹ مارشل ہونا چاہیے “ سی سی پی او لاہور کی تجویز

”پولیس میں بھی کورٹ مارشل ہونا چاہیے “ سی سی پی او لاہور کی تجویز
”پولیس میں بھی کورٹ مارشل ہونا چاہیے “ سی سی پی او لاہور کی تجویز

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)سی سی پی او لاہورعمر شیخ نے پولیس سسٹم میں کورٹ مارشل کی تجویز دے دی۔ان کا کہنا ہے کہ پولیس میں بھی آرمڈ فورسز کی طرز پر کورٹ مارشل ہونا چاہیے، موجودہ قوانین کے تحت سزائیں دینے سے کوئی بہتری نہیں آرہی، انصاف کی فراہمی کے لیے کورٹ مارشل طرز کی ترامیم وقت کی ضرورت ہے۔سی سی پی او لاہورعمر شیخ نے یہ تجویز آئی جی پنجاب کو ایک درخواست میں دی ہے۔ انہوں نے لکھا کہ پولیس میں ڈسپلن اور سروس ڈلیوری کیلئے سخت سے سخت قوانین بنانا ہوں گے۔انہوں نے کہا کہ 5 برسوں میں 25 سے 30 فیصد سے زائد نفری کو سزائیں دی گئیں مگر ان سزاوں کے باوجود عدلیہ، میڈیا اور عوام شکایات کرتے دکھائی دیتے ہیں۔عمر شیخ کے مطابق پولیس کورٹ مارشل کا مقصدیہ ہےکہ کوئی سزایافتہ اہلکار یا افسر دوبارہ نوکری پر بحال نہ ہوسکے۔ان کامزیدکہنا ہےکہ موجودہ قوانین کے تحت نوکری سے نکالے جانے پر اہلکار عدالتوں یادیگر طریقوں سے واپس آ جاتے ہیں۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -