گرانہ ڈاٹ کام اور یونیورسٹی آف سینٹرل پنجاب کاتعلیمی سرگرمیوں کا سلسلہ جاری 

گرانہ ڈاٹ کام اور یونیورسٹی آف سینٹرل پنجاب کاتعلیمی سرگرمیوں کا سلسلہ ...

  

لاہور(پ ر)گرانہ ڈاٹ کام نے یونیورسٹی آف سینٹرل پنجاب کے اشتراک سے شروع کیے جانے والے ریئل اسٹیٹ کے شعبے میں گریجوایشن کورسز کامیابی سے مکمل کرنے والے طلباء کے لیے نوکریوں کا اعلان کر دیا۔گرانہ ڈاٹ کام اور یونیورسٹی آف سینٹرل پنجاب کے مشترکہ تعاون سے ریئل اسٹیٹ کے شعبے میں گریجوایشن ڈگری میں تعلیمی سرگرمیوں کا سلسلہ جاری ہے۔نوجوانوں کی استعداد کار بڑھانے، ایک محفوظ اور روشن مستقبل کی فراہمییقینی بنانے کے لیے ریئل اسٹیٹ  میجنمنٹ میں گریجوایشن کورسز کا آغاز کیا گیا گیا ہے۔پاکستان میں ریئل اسٹیٹ کے شعبے میں یہ اپنی نوعیت کا پہلا ڈگری کورس ہے جس میں طلباء  اور ریئل اسٹیٹ بزنس سے منسلک افرادی قوت کو مذکورہ شعبے میں جدید علوم سے روشناس کروانا ہے۔ریئل اسٹیٹ مینجمنٹ میں گریجوایشن کورس متعارف کروانے کا بنیادی مقصد ملک میں بڑھتی ہوئی تعمیراتی سرگرمیوں اور ریئل اسٹیٹ بزنس کو جدید تقاضوں سے ہم ا?ہنگ بنانے کے ساتھ ساتھ نوجوان نسل کو پیشہ وارانہ مواقع فراہم کرنا ہے۔ریئل اسٹیٹ بزنس صرف پراپرٹی کی خرید و فروخت تک محدود نہیں ہے۔

بلکہ اس کا دائرہ کار تعمیراتی سرگرمیوں اور سول انجینئرنگ تک وسیع تر ہوتا چلا جا رہا ہے اور یہی وجہ ہے کہ اس شعبے کو نوجوانوں کے روشن مستقبل سے تعبیر کیا جا رہا ہے۔گرانہ ڈاٹ کام اور یو سی پی کے تعاون سے منعقدہ ویبینار سے خطاب کرتے ہوئے گرانہ ڈاٹ کام کے سی ای او شفیق اکبرکا کہنا تھا کہ گرانہ ڈاٹ کام کے چیف ایگزیکٹو کا کہنا تھا کہ یو سی پی سے ریئل اسٹیٹ مینجمنٹ میں کامیابی سے گریجوایشن کی ڈگری مکمل کرنے والے طلباء  کو گرانہ ڈاٹ کام میں ملازمت کی پیشکش کی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ ریئل اسٹیٹ کے شعبے میں عدم ا?گاہی، منصوبہ بندی کے فقدان اور معلومات تک عدم رسائی کے باعث سرمایہ کاری سے متعلق عوام کو پریشانی کا سامنا رہتا ہے۔ وزیراعظم شکایات سیل میں 70 فیصد سے زائد شکایات ریئل اسٹیٹ سیکٹر میں عوامی مسائل سے متعلق ہیں.شفیق اکبر کا کہنا تھا کہ ریئل اسٹیٹ سیکٹر پاکستان کی معیشت میں کلیدی کردار ادا کر سکتا ہے جبکہ وزیراعظم پاکستان کی جانب سے اراضی کے ریکارڈ کو ڈیجیٹائز کرنے اور ریئل  اسٹیٹ ریگولیشن اتھارٹی (ریرا) کے قیام جیسے قومی مفاد کے اقدامات قابل ستائش ہیں۔انہوں نے بتایا کہ اس سال پاکستان کے ریئل اسٹیٹ سیکٹر میں 25 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری آئی ہے۔ اگلے 15 سے 20 سالوں میں دس سے بارہ کروڑ لوگوں کو گھر چاہئیے ہونگے یعنی 2 کروڑ گھر ہر سال۔ انہوں نے کہا کہ اگر ہم ایسا کرنے میں کامیاب ہو جاتے ہیں تو آئندہ 15 سے 20 سالوں میں پاکستان کی ویلیو میں 1.52 کھرب ڈالر کا اضافہ کیا جا سکتا ہے۔اس موقع پر یونیورسٹی ا?ف سینٹرل پنجاب کے وائس چانسلر نصر اکرام کا کہنا تھا کہ بی ایس ریئل اسٹیٹ مینجمنٹ ڈگری پروگرام کی مدد سے لوگوں میں مذکورہ شعبے سے متعلق ا?گاہی کی فراہمی میں مدد ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ ریئل اسٹیٹ میں مینجمنٹ کورس وقت کی اہم ضرورت ہے۔ مذکورہ کورس کی مدد سے ہم اگلے 5 سے دس سالوں میں سرٹیفائیڈ ریئل اسٹیٹ مارکیٹ ایکسپرٹ کی دستیابییقینی بنانے میں کامیابی حاصل کر لیں گے۔ڈینیو سی پی ڈاکٹر فیصل مصطفیٰ  کا کہنا تھا کہ ریئل اسٹیٹ سیکٹر میں مینجمنٹ ڈگری پروگرام وقت کی اہم ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ مذکورہ کورس کی مدد سے ہم اگلے 5 سے دس سالوں میں سرٹیفائیڈ ریئل اسٹیٹ مارکیٹ ایکسپرٹ کی دستیابییقینی بنانے میں کامیابی حاصل کر لیں گے۔ بی ایس ریئل اسٹیٹ مینجمنٹ ڈگری پروگرام عملی اور نصابی سرگرمیوں پر مشتمل ہے۔

مزید :

کامرس -