ورلڈ کا ٹن ڈے پر سیمینارز، سیڈسیکٹر میں بہتری لائیں گے: فخرامام 

ورلڈ کا ٹن ڈے پر سیمینارز، سیڈسیکٹر میں بہتری لائیں گے: فخرامام 

  

ملتان،بہاول پور،ڈیرہ غازی خان،راجن پور،بوریوالا،ٹھٹھہ صادق آباد،اڈہ پل 14، ڈہرکی،نورپورنورنگا،میلسی(سپیشل رپورٹر،بیورو رپورٹ، سٹی رپورٹر،تحصیل رپورٹر،نامہ نگار،نمائندہ پاکستان) حکومت کپاس کی فصل کو منافع بخش بنانے اور کپاس کے کاشتکاروں کے لئے زیادہ سے زیادہ سہولیات فراہم کرنے کے لئے پوری تندہی سے کام کر رہی ہے،ہمارے نزدیک کسانوں کی خوشحالی اولین ترجیح ہے اور ہم سیڈ سیکٹر میں (بقیہ نمبر27صفحہ6پر)

مزید بہتری لانے کے لئے کام کر رہے ہیں۔ یہ بات وفاقی وزیر برائے نیشنل فوڈ سکیورٹی اینڈ ریسرچ سید فخر امام نے سنٹرل کاٹن ریسرچ انسٹیٹیوٹ ملتان میں منعقد ہونے والے عالمی یوم کپاس پروگرام کے شرکاء سے آن لائن خطاب کرتے ہوئے کہی۔ان کا مزید کہنا تھا کہ ہم کپاس کی پیداواری لاگت کم کرنے اور فی ایکڑ پیداوار میں اضافے کے لئے جامع منصوبہ بندی پر عمل پیرا ہیں۔ صوبائی وزیر زراعت  حسین جہانیاں گردیزی نے تقریب کے شرکاء سے اپنے آن لائن خطاب میں کہا کہ کپاس ہماری معیشت کی شہ رگ ہے اور ہم کپاس کی پیداواری لاگت میں کمی لانے اور جنیاتی سیڈ ٹیکنالوجی پر کام کرنے جارہے ہیں۔ کپاس کے عالمی یوم پر سیکرٹری زراعت جنوبی پنجاب ثاقب علی عطیل کا کہنا تھا ملکی معیشت کے استحکام اور کپاس کے فروغ کے لئے تمام اسٹیک ہولڈرز کو ایک پیج پر آنا ہوگا۔وائس پریذیڈنٹ پی سی سی سی ڈاکٹر محمد علی تالپور نے کہا کہ حکومت کپا س کی تحقیق وترقی کے لئے ریسرچ اداروں میں فنڈز کی دستیابی کو یقینی بنائے گی۔کاٹن کمشنر ڈاکٹر خالد عبد اللہ کا کہنا تھا کہ وزارت نیشنل فوڈ سکیورٹی اینڈ ریسرچ کپاس کی بحالی وترقی کے لئے مختلف پروجیکٹس پر کام کر رہی ہے۔ ڈائریکٹر سی سی آر آئی ڈاکٹر زاہد محمود کا کہنا تھا کہ ادارہ ہذا ٹیکسٹائل انڈسٹری کی ضروریات کے پیش نظر بہترین اقسام تیار کر رہا ہے۔پی سی جی اے کے چیئرمین سہیل ہرل کا کہنا تھا کہ کپاس کی فصل بڑھانے کیلئے جدید ٹیکنالوجی حاصل کی جائے معیاری بیج اور معیاری ادویات حاصل کی جائیں اور کپاس کے کاشتکاروں کو ضروری مراعات دی جائیں۔ کپاس کے عالمی دن کے موقع پر سیڈ ایسو سی ایشن کے چیئر مین رانا سلمان، کسان اتحاد کے صدر چوہدری محمد انور، خالد کھوکھر، ایف پی سی سی آئی کے کنوینر سہیل طلعت، انجمن کاشتکاروں کے رانا افتخار، حاجی محمد ارشد و دیگر نے تقریب کے شرکاء سے خطاب کیا۔ عالمی یوم کپاس کے موقع پر خواتین و مرد کاشتکاروں کی کثیر تعداد کے علاوہ فیشن انڈسٹری، جنرز، ٹیکسٹائل اندسٹریز، سیڈ، فرٹیلائزر، پیسٹی سائیڈز، زرعی جامعات اور دیگر اسٹیک ہولڈرز کی کثیر تعداد نے شرکت کی اور سیکرٹری زراعت جنوبی پنجاب ثاقب علی عطیل کی زیر قیادت کاٹن واک میں حصہ لیا۔قبل ازیں وزیر زراعت پنجاب سید حسین جہانیاں گردیزی نے کہا ہے کہ کپاس کی فصل کے حوالے سے بین الاقومی سطح پر آج ایک خاص دن کا منایا جانا اس کی اہمیت کو واضح کرتا ہے۔امید ہے کہ آج کے دن تمام سٹیک ہولڈرز ایسی تجاویز دیں گے جو کپاس کی فی ایکڑ پیداوار میں اضافہ کیلئے مفید ہوں۔وزیر زراعت نے مزید کہا کہ موسمیاتی تبدیلیوں کی وجہ سے کپاس کے بیج کی پرانی ٹیکنالوجی کے استعمال کے باعث پیداوار میں کمی کا سامنا ہے۔ حکومت اس حوالے سے کپاس کی نئی اقسام کے بیج کی تیاری کی طرف بھرپور توجہ دے رہی ہے جس سے فصل پر سفید مکھی، گلابی سنڈی و دیگر کیڑے مکوڑوں کا حملہ کم ہوگا۔ورلڈ کاٹن ڈے کے موقع پرنیشنل کاٹن بریڈنگ ریسرچ انسٹیٹیوٹ اسلامیہ یونیورسٹی بہاول پور کے زیر اہتمام کاٹن سیمینار کا انعقاد کیا گیا۔شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے پرو وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر نوید اختر کا کہنا تھا کہ آج اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور پاکستان میں کپاس کی بحالی کے لیے کلیدی کردار ادا کرر ہی ہے۔پروفیسر ڈاکٹر نوید اختر کا کہنا تھا کہ فیکلٹی آف ایگریکلچر ریسرچ کے میدان میں بہت آگے ہے۔ڈین فیکلٹی آف ایگریکلچر پروفیسر ڈاکٹر محمد اقبال بندیشہ کا کہنا تھا کہ پاکستان میں کپاس کے اچھے دن آرہے ہیں۔اسلامیہ یونیورسٹی اوکرا لیف ورائٹی پر کام کر رہی ہے جس کی بدولت فی ایکڑ پودوں کی تعداد بڑھا رہے ہیں۔رجسٹرار اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور رپروفیسر ڈاکٹر معظم جمیل کا کہنا تھا کہ کپاس ملکی معیشت میں کلیدی کردار ادا کرتی ہے۔سیمینار میں چیئرمین شعبہ فاریسٹری پروفیسر ڈاکٹر تنویر حسین ترابی،چیئرمین شعبہ ہارٹیکلچر ڈاکٹر نفیس احمد،چیئرمین ایگرانومی ڈاکٹر عون ثمر رضا سمیت اساتذہ،ماہرین اور کاشتکاروں کی بڑی تعداد میں شرکت کی۔کاٹن ریسرچ سٹیشن فاضل پور کی جانب سے سیمینار کا اہتمام کیا گیاجس میں انچارج ڈاکٹر ضیاء اللہ،اسسٹنٹ ڈائریکٹر پیسٹ وارننگ راجن پور راحت حسین راشد سمیت دیگر افسران اور کسانوں کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔مقررین نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پہلا اسپرے تاخیر سے کرنے سے دوست کیڑے محفوظ رہتے ہیں اور کپاس کی پیداوار میں اضافہ ہوتا ہے۔قبل ازیں کپاس کے عالمی دن کے حوالے سے واک بھی کی گئی جس میں شرکانے بینرز اور پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے۔تقریبات میں زرعی ادویات کی کمپینیوں کے نمائندگان بھی شریک ہوئے۔کپاس کے عالمی دن کے موقع پر محکمہ زراعت کی جانب سے واک کا اہتمام کیا گیا واک کی قیادت اسسٹنٹ ڈائریکٹر زراعت چوہدری الطاف حسین نے کی۔محکمہ زراعت کے اہلکاروں نے بھی واک میں شرکت کی۔اسسٹنٹ ڈائریکٹر زراعت چوہدری الطاف کا کہنا تھا کہ واک کا مقصد کسانوں کو کپاس کی اہمیت،پیداوار اور جدید ریسرچ کے مطابق اسکی کاشت کے حوالہ سے آگاہی فراہم کرنا ہے۔جہانیاں میں بھی کپاس کا عالمی دن منایا گیا اس سلسلے میں محکمہ زراعت توسیع جہانیاں کی طرف سے غلہ منڈی میں پروقار تقریب کا اہتمام کیا گیا۔اجلاس کی صدارت اسسٹنٹ ڈپٹی ڈائریکٹر محکمہ زراعت توسیع جہانیاں مظہر حسین کلیم جبکہ مہمان خصوصی اسسٹنٹ کمشنر جہانیاں آمنہ احسان تارڑ اور کسان اتحاد پاکستان کے مرکزی جوائنٹ سیکرٹری چوہدری اشتیاق احمد کاہلوں تھے۔کپاس فائدہ مند اور زمین دوست فصل ہے،کپاس بونے سے زمین کی طاقت برقرار رہتی ہے۔ان خیالات کا اظہار سردار احمد گڈانی ڈپٹی ڈائریکٹر سوشل ویلفیئر ضلع گھوٹکی نے کپاس  کے عالمی دن کے موقع پر ڈہرکی میں این جی او ریڈز پاکستان کی زیر اہتمام منعقدہ سیمینار میں خطاب کرتے ہوئے کیا۔سردار احمد گڈانی نے ریڈز پاکستان کے  افسران ذکیہ عمران، علی  علی نواز مہر،علی بخش مہر کی محنت کوبھی سراہا۔اس موقع پر دیگر مقررین نے بھی سیمینار سے خطاب کیا۔زراعت آفیسر توسیع راجن پور شاہ نو از خان فیلڈ اسسٹنٹ غلام حسن کے ہمراہ آئی پی ایم نمائشی پلاٹ موضع  کوئلہ عسین میں زمینداروں کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ آئی پی ایم کی بدولت امسال کیاس کے کاشتکاروں کو کم و بیش 40 ارب روپے کی خطیر رقم کی بچت ہوئی ہے۔پروگرام کے اختتام پر زمینداروں کو نمائشی پلاٹ کا معائنہ بھی کرایا گیا اور ان میں کچن گارڈننگ کے پیکٹس بھی تقسیم کئے گئے۔کپاس ملکی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتی ہے۔ کپاس کی بحالی ملکی معیشت کے استحکام کے لیے وقت کی اہم ضرورت ہے۔ان خیالات کا اظہار اسسٹنٹ ڈائریکٹر محکمہ زراعت(توسیع) ڈاکٹر ازور رضا گیلانی نے کپاس کے عالمی دن کے موقع پر یونین کونسل بہادرپور میں آگاہی واک کے دوران کیا۔اس موقع پر زراعت افسر سعد الرحمٰن نے فیلڈ اسسٹنٹس اظہر شاہ، راشد علی رحمانی، عامر صدیق،یاسر عرفات،ترقی پسند کاشتکاروں ملک افضل کنہوں، ملک مختیار احمد دیپال، ملک محمد شکیل، رائے حسیب الرحمٰن، ملک فیاض احمد، سردار سلیم نواز چن، لیاقت رحمانی اور ولی خان بلوچ نے بھی خطاب کیا۔ چیئرمین مارکیٹ کمیٹی میلسی میاں اللہ دتہ خالد ارائیں، سینئر ممبران مارکیٹ کمیٹی حیدر خان اور محمد انور بھٹی نے کہا ہے کہ میلسی کپاس کی پیداوار میں نہایت ہی ذرخیز علاقہ رہا ہے، لیکن گذشتہ 10 سالوں کے دوران ماضی کی حکومتوں اور برسر اقتدار طبقہ کی کاشتکارکش پالیسیوں کی وجہ سے اس علاقہ میں کپاس کی فصل تباہ ہو کر رہ گئی انہوں نے کہا کہ کپاس کا عالمی دن منانے کی بجائے کپاس کے ریسرچر اداروں کو اپنی کارکردگی بہتر بنانا ہو گی۔محکمہ زراعت  کے زیر اہتمام عالمی یوم کپاس کے موقع پر آگاہی واک اور سیمینار کا انعقاد کیاگیا۔ ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر فنانس و پلاننگ سیف الرحمن، ڈائریکٹر زراعت توسیع مہر عابد حسین، ڈپٹی ڈائریکٹر زراعت پیسٹ وارننگ الیاس رضا کلاچی،ڈپٹی ڈائریکٹر زراعت توسیع غلام محمد بزدار، اسسٹنٹ ڈائریکٹر زراعت ملک محمد کلیم کوریہ اور دیگر نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ محکمہ زراعت کی سفارشات پر عمل کرنے سے فی ایکڑ زیادہ پیدوار حاصل کی جاسکتی ہے۔

ورلڈکاٹن ڈے

مزید :

ملتان صفحہ آخر -