میٹروبس منصوبے سے آلودگی میں اضافہ،شہری ذہنی مریض بن گئے

میٹروبس منصوبے سے آلودگی میں اضافہ،شہری ذہنی مریض بن گئے

لاہور (عامر بٹ سے تصاویر:ذیشان منیر) میٹرو بس منصوبے میں پنجاب حکومت کی ناقص حکمت عملی نے صوبائی دارالحکومت میں 7 لاکھ سے زائد آبادی کی جانیں اور مال خطرے میں ڈال دیا ہے فیروز پور روڈ سے لے کر مینار پاکستان تک ترقیاتی کاموں کی غرض سے کی جانے والی کھدائی اور اس سے پیدا ہونے والی ماحولیاتی آلودگی نے زندہ دلان شہر کے رہائشیوں کو مختلف بیماریوں میں منتقل کرتے ہوئے مریض بنا دیا ہے جبکہ ٹریفک وارڈن کی جانب سے بھی ٹریفک کا نظام کنٹرول نہ ہونے کے باعث کئی کئی گھنٹے نا صرف فیملیز کو گاڑیوں میں بند ہونا پڑ رہا ہے بلکہ ایمبولینس میں ایمرجنسی کی صورت میں زندگی اور موت کی کشمکش میںمبتلا مریضوں کی زندگیاں بھی داﺅ پر لگ چکی ہیں تفصیلات کے مطابق فیروز پور روڈ سے مینار پاکستان تک ترقیاتی کاموں کی غرض سے کی جانے والی کھدائی کے باعث جہاں کئی کئی گھنٹے ٹریفک جام رہنے لگی ہے وہاں سرکاری و غیر سرکاری دفاتر میں جانے والے ملازمین کے لئے مقررہ ٹائم پر دفتر پہنچنا بھی ناممکن ہو چکا ہے۔ کاروبار بند ہونے کی وجہ سے سینکڑوں خاندانوں کو فاقہ کشی کرنا پڑ رہی ہے دفاتر، سکولوں اوردیگر ضروری کاموں سے جانے والوں کے لئے ضلع لاہور میں سفر کرنا انتہائی عذات بن چکا ہے ساری مصیبتیں جھیلنے والی عوام پر ٹریفک وارڈن بھی رہی سہی کسر دھڑا دھڑ چالان کرنے کی صورت میں نکال دی ہے جن کو ٹریفک پولیس کے اعلیٰ افسران کی جانب سے روزانہ کی بنیاد پر 20 چالان سے زائد چالان دینے کا حکم دیا جاتا ہے اس کے علاوہ ضلع کچہری، داتا دربار، مینار پاکستان، چوک جوبرجی، اسلامیہ پارک، اور مال روڈ سے لے کر فیروز پور روڈ تک بڑے بڑے بیرئیرز لگا کر راستے بند کرنے کی وجہ سے بھی شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے جبکہ اس منصوبے کی وجہ سے درجنوں بجلی کے کھمبوں سے لٹکتی تاریں بھی ٹوٹ کر گرتی رہتی ہیں جس کی وجہ سے کئی کئی گھنٹے بجلی کی بندش رہنا معمول بن چکا ہے جس سے ضلعی حکومت کے دفاتر میں بیٹھنے والے اعلیٰ افسران کے لئے حبس اور گرمی میں کام کرنا انتہائی دشوار ہو چکا ہے عوام الناس کا کہنا ہے کہ وزیر اعلیٰ پنجاب عوام کو اس منصوبے کے ذریعے جتنا فائدہ دیں گے وہ بعد کی بات ہے مگر موجودہ حالات میں شہریوں کو درپیش مسائل کا جلد حل نہ نکالا گیا اور ٹریفک کے نظام کو بحال کرنے اور بند کئے جانے والے راستوں کو بروقت نہ کھولا گیا تو شہریوں کو ایسے حالات میں شدید مشکلات کا سامنا کرنے پڑے گا اس موقع پر ایسی حکمت عملی تیار کرنی چاہیے ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1