مقدمہ درج نہ ہونا، صوبے میں قانون کی حکمرانی نہ ہونے کی دلیل ہے، ظہیر الدین

مقدمہ درج نہ ہونا، صوبے میں قانون کی حکمرانی نہ ہونے کی دلیل ہے، ظہیر الدین

لاہور (جنرل رپورٹر) پاکستان مسلم لیگ (ق) پنجاب کے جنرل سیکرٹری چودھری ظہیر الدین خان اور ایڈیشل جنرل سیکرٹری ناصر محمود گل نے کہا ہے کہ پنجاب کے اندر کسی قانون پر عمل درآمد نہیں ہو رہا قبضہ مافیا اور غنڈے دندناتے پھرتے ہیں دن دہاڑے معروف کمپنی نے اس کے ڈرائیور کی کوتاہی سے کچلے جانے والے مزدور صدیق کو مار دیا گیا اور لاش یقینا کمپنی اور پولیس کی ملی بھگت سے روانہ کی گئی ہو گی مقدمہ درج نہ ہونے کا مطلب صوبے میں قانون کی حکمرانی نہ ہونے کی سب سے بڑی دلیل ہے ایسے واقعات میں پولیس کی خاموشی کی تمام تر ذمہ داری صوبے کے چیف ایگزیکٹو پر ہوتی ہے وہ ”پاکستان” سے گفتگو کر رہے تھے انہوں نے کہا کہ حکومت پنجاب صدیق کی موت کے ذمہ داروں کے خلاف مقدمہ درج کرائے اور اسے کمپنی سے معاوضہ دلائے اور خود بھی ان کی مدد کرے۔

مزید : صفحہ اول