پاکستان سمیت دنیا بھر میں یوم تحفظ ختم نبوت ایمانی جوش وجذبہ سے منایاگیا

پاکستان سمیت دنیا بھر میں یوم تحفظ ختم نبوت ایمانی جوش وجذبہ سے منایاگیا

لاہور (نمائندہ خصوصی) جمعہ کے روز دنیا بھر سمیت ملک بھر یوم ختم نبوت منایا گیا، 38 سال قبل ذوالفقار علی بھٹو کے دور میں پارلیمنٹ میں لاہوری وقادیانی مرزائیوں کو غیر مسلم اقلیت قرار دیئے جانے کے تاریخی دن 7 ستمبر کے حوالے سے ملک کے طول و عرض کے علاوہ بیرون ممالک بھی یوم ختم نبوت کے حوالے سے اجتماعات سیمینار ،مذاکرے اور ریلیوں کا انعقاد کیا گیا۔تمام مسلم مکاتب فکر کے علماءاور طباءنے جمعہ کے اجتماع میں عقیدہ ختم نبوت کی اہمیت اور عوام کو 1974ءمیں ختم نبوت کی ایک بڑی تحریک کی کامیابی کے حوالے سے آگاہ کیا علماءکرام نے اپنے اپنے خطابات میں ملک کی موجودہ صورتحال میں قیام امن ،اتحاد بین المسلمین کے فروغ ، فرقہ واریت کے خاتمہ، مسلمہ پر قادیانی فتنہ کو بے نقاب کرنے اور نسل نو کی ایمان کی حفاظت میں اہم کردار ادا کرنے کے حوالے سے ضرورت پر زور دیا۔متحدہ تحریک ختم ِنبوت کے مطابق برطانیہ ،جرمنی ،کینڈا،ڈنمارک،اٹلی اور کئی دیگر مغربی ممالک میں بھی تقریبات منعقد ہوئیں ۔ علماءکرام اور خُطباءنے اس کو موضوع بنایا اور عالمی سطح پر توہین رسالت قانون کے خلاف مہم کی شدید الفاظ میں مذمت کی ۔مجلس احرار ِ اسلام پاکستان ،عالمی مجلس تحفظ ختم ِنبوت ،انٹر نیشنل ختم ِنبوت موومنٹ جے یو آئی اور دیگر کئی جماعتوں نے ”یوم ِتحفظ ختم ِنبوت “کی اپیل کر رکھی تھی ۔مجلس احرار ِ اسلام پاکستان اور تحریک تحفظ ختم ِنبوت کے قائدین اور رہنماﺅں سید عطاءالمہےمن بخاری نے چنیوٹ ،عبداللطیف خالد چیمہ ،سید محمد کفیل بخاری اور قاری محمد یوسف احرار نے لاہور،مولانا محمد مغیرہ نے چناب نگر ،مفتی عطاءالرحمن قریشی اور مولانامحمد احتشام الحق معاویہ نے کراچی ،حافظ محمد اسماعیل نے ٹوبہ ٹیک سنگھ ،قاری محمد اصغر عثمانی نے جھنگ ،مولانا تنویر الحسن نے تلہ گنگ ،مولانا عبدالرحمن نے راولپنڈی،مولانا محمدصفدر عباس اور مولانا منظور احمد نے چیچہ وطنی ،مولانا فقیر اللہ رحمانی نے رحیم یار خان اور دیگر رہنماﺅں نے مختلف مقامات پر خطاب کرتے ہوئے کہاکہ قوم نے ایک طویل اور صبر آزما جدوجہد کے بعد 7 ۔ ستمبر 1974 ءکو بڑی کامیابی حاصل کی اور پارلیمنٹ نے متفقہ طور پر قادیانیوں کو غیر مسلم اقلیت قرار دیا۔اِن رہنماﺅں نے کہاکہ رمشا مسیح کیس یا کسی بھی بہانے سے قانون توہین رسالت کے خلاف مہم کا ہر سطح پر مقابلہ کیا جائے گا۔ احرار رہنماﺅں ،ختم ِنبوت کے مبلغین ،علماءکرام اور خُطبا ءعظام نے اپنے خطبات میں کہاکہ ایوان صدر کی بالکونیوں میں قادیانی کثرت سے موجود ہیں،وفاقی وزیر داخلہ عبدالرحمن ملک نے چند ہفتے پہلے FIA کے ڈائریکٹر جنرل جیسے اہم عہدے پر انور ورک نامی سکہ بند قادیانی کو مسلط کیا ہے ۔لندن سے آمدہ اطلاعات کے مطابق متحدہ مجلس عمل تحفظ ختم ِنبوت کی اپیل پر پورے برطانیہ میں تمام مکاتب فکر نے ”یو م ِتحفظ ختم ِنبوت “منایا ۔ختم ِنبوت اکیڈمی لندن میں ایک بڑاسیمینارمنعقد ہوا ،اس سے عبدالرحمن باوا،مولانا سہیل باوا اور دیگر مقررین نے خطاب کیا اور مطالبہ کیا کہ یو این او قادیانیوں کو اسلام کا ٹائٹل استعمال کرنے سے روکے ،جس سے متحدہ تحریک ختم ِنبوت رابطہ کمیٹی پاکستان کے قائدین مولانا زاہد الراشدی نے گوجرانوالہ ،مولانا محمد الیاس چنیوٹی نے چنیوٹ ،ڈاکٹر فرید احمد پراچہ ،مولانا عبدالرﺅف فاروقی ،مرزا محمد ایوب بیگ اور رانا محمد شفیق خاں پسروری نے لاہورمیں خطاب کرتے ہوئے کہاکہ قادیانیوں کے مذہبی عقائد کے ساتھ ساتھ ان کا سیاسی تعاقب کرنے کی ضرورت ہے ۔مقررین نے کہاکہ قادیانی بین الاقوامی سطح پر پاکستان کے خلاف لابنگ اور سازشوں میں مصروف ہےں۔متحدہ تحریک ختم ِنبو ت رابطہ کمیٹی کے کنونیئر عبداللطیف خالد چیمہ نے اپنے خطاب میں کہاکہ اسرائیلی فوج اور مختلف اداروں میں ایک ہزار سے زائد پاکستانی قادیانی موجود ہیں ،موجودہ پیپلز پارٹی اپنے بانی ذوالفقار علی بھٹو مرحوم کے تحفظ ختم ِنبوت کے کردار سے غداری کررہی ہے بھٹو نے کہاتھا کہ ”قادیانی پاکستان میں وہی حیثیت حاصل کرنا چاہتے ہیں جو یہودیوں کو امریکہ میں حاصل ہے ۔جامع مسجد رحمانیہ لاہور میں جمعہ کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے جے یو آئی کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات اور جامعہ رحمانیہ کے ناظم اعلیٰ مولانا محمد امجد خان نے کہا کہ عقیدہ ختم نبوت ایمان کی اساس اور بنیاد ہے اس کے بغیر کوئی عبادت قبول نہیں ہے انہوں نے کہاکہ آئین ختم نبوت کی ترمیم سمیت اسلامی دفعات کے خلاف سازشیں عروج پر ہیں لیکن جے یو آئی علماءاور عوام کے ساتھ مل کر ایسی ہرسازشوں کا مقابلہ کریں گے ۔انہوں نے کہاکہ بیرونی نوٹوں پر بننے والی این جی اوز ملک کو سیکولر بنانے اور 73ءکے آئین سے ناموس رسالت کے قانون اور قادیانیوں کو غیر مسلم اقلیت قرار دینے کی شق کو ختم کرنے کے لئے کوشاں ہیں اور ملک میں بے حیائی کا سیلاب لانے کے لئے خفیہ سازشیں کررہی ہیں۔ مختلف مساجد میں یوم ختم نبوت کے موقع پر بیان کرتے ہوئے مولانا محب النبی، مولانا قاری اللہ، مولانا سیف الدین سیف، حافظ عبدالودود شاہد، قاری عبدالغفار، حافظ اشرف گجر، مولانا شبیر احمد عثمانی،قاری نذیراحمد اور دیگر نے کہا کہ ختم نبوت کے عقیدے کے لئے کام کرنے والے علماءکرام، مشائخ عظام اور سیاسی و سماجی رہنماﺅں کی خدمات پر انہیں زبردست خراج تحسین پیش کیا۔ جامعہ نعیمیہ کے ناظم اعلیٰ مولانا راغب حسین نعیمی نے یوم ختم نبوت کے سلسلے میں خطبہ جمع میں کہا کہ اسلام ایک حقیقت پسند دین ہے جبکہ قادیانی غیر حقیقت پسند ہیں اور اسی بناءپر غیر مسلم ہیں۔

مزید : صفحہ آخر