ڈی ایچ اے میں مالی کو گاڑی تلے کچلنے والا ملزم گرفتار نہ ہوسکا ،ورثا ءسراپا احتجاج

ڈی ایچ اے میں مالی کو گاڑی تلے کچلنے والا ملزم گرفتار نہ ہوسکا ،ورثا ءسراپا ...

لاہور (کامران مغل/ تصاویر ذیشان منیر) بچوں کا پیٹ پالنے کی خاطر بیماری کے باجودمحنت مزدوری کرکے 8بچوں کی کفالت کی ذمہ داری نبھانے والے 60سالہ مالی کو 2روز قبل مبینہ طور پر نشے میں دھت امیر زادے نے ون وے ڈرائیونگ کرتے ہوئے بے دردری سے گاڑی تلے کچل کر ہلاک کردیاتھا جبکہ اس وقت موقع پر موجود ڈی ایچ اے کا سیکیورٹی گارڈ بھی ملزم کوپکڑنے میں ناکام رہا جس کے باعث ملزم فرار ہونے میں کامیاب ہوگیاتھا، 2روز گذرنے کے بعد بھی ملزم گرفتارنہیں ہو سکاہے جس پر مظلوم خاندان نے انصاف کی کرن نظر نہ آتے ہوئے فیصلہ اللہ پر چھوڑ دیا، بوڑھے باپ کی لاش گھر پہنچنے پر ورثاءنوحہ کناں تھے اور بچوں سمیت خواتین زارو قطار روتی رہیں ،متوفی لیاقت کو سینکڑوں سوگواروں کی موجودگی میں آہوں اور سسکیوں میں اسے سپرد خاک تو کردیا گیا لیکن باپ کے جنازہ کو کندھا دینے والے بیٹوں کے لب پر ایک ہی سوال گردش کررہا تھا کہ انصاف کب ملے گا کیونکہ پولیس انہیں ملزم کو گرفتار کرنے کی بجائے طفل تسلیاں دینے کی ڈیوٹی سرانجام دینے میں مصروف ہو چکی ہے ۔تفصیلات کی مطابق لڈر پنڈ کے قریب واقع مہر ٹاﺅن کے رہائشی سادھو مسیح کا بیٹا لیاقت مسیح نے 2 ماہ قبل DHA فیز 5 میں بطور مالی ڈیوٹی سرانجام دینا شروع کی تھی ، متوفی لیاقت مسیح جمعرات شام 4بجے کے قریب قبل سنٹرل پارک ڈبل سٹرکوں کے درمیان واقع کیاری میں کام کررہا تھا کہ اسی اثنامیں مخالف سمت سے تیز رفتارپجارو گاڑی نمبرSW-562پرسوار نامعلوم نوجوان جس نے اسے گاڑی کے ٹائروں تلے کچل ڈالا جس کے باعث لیاقت مسیح کی پسلیوں سمیت دیگر جسم شدید زخمی ہوگیا۔ ڈی ایچ اے کے سیکیورٹی گارڈ محبوب خان کا کہنا تھا کہ اس نے ملزم کو پکڑنے کی کوشش کی لیکن وہ دھکا دے کر موقع سے گاڑی چھوڑ کر فرار ہونے میں کامیاب ہو گیا۔ متوفی لیاقت کے بیٹے جاوید مسیح کی مدعیت میں مقدمہ نمبر562/12بجرم 322کے تحت مقدمہ درج کر لیا ہے۔

مزید : ایڈیشن 1