اسلام آباد انتظامیہ لیڈی ہیلتھ ورکرز کو ایک ہفتہ میں تنخواہیں ادا کرے، سپریم کورٹ

اسلام آباد انتظامیہ لیڈی ہیلتھ ورکرز کو ایک ہفتہ میں تنخواہیں ادا کرے، سپریم ...

اسلا م آ باد (آئی این پی)سپریم کورٹ نے وفاقی دارلحکومت کی لیڈی ہیلتھ ورکرز کی ملازمتوں پر مستقلی اور تنخواہوں کی عدم ادائیگی کے مقدمہ میں وفاقی حکومت کو ملازمین کو ایک ہفتہ کے اندر تنخواہیں دینے کا حکم دےتے ہوئے مزید سماعت اکتوبر کے پہلے ہفتے تک ملتوی کر دی ۔جمعہ کو جسٹس ناصرالملک کی سر براہی میں دو رکنی بنچ نے مقدمے کی سماعت کی۔ اسلام باد انتظامیہ کی جانب سے تا حال لیڈی ہیلتھ ورکرز کو تنخواہ ادا نہیں کی گئیں،دوران سماعت درخواست گزار نے عدالت سے استدعا کی کہ لیڈی ہیلتھ ورکز کی مستقلی کے معاملے پر حکومت کو احکامات جاری کیے جائیں۔ اسٹیبلشمنٹ حکام نے عدالت کو بتایا کہ لیڈ ی ہیلتھ ورکرز کی مستقلی کی سمری وزیر اعظم کو بھیجوائی جا چکی ہے جس کیلئے چار ہفتوں کی مہلت دی جائے،جسٹس اعجاز چوہدری نے ریمارکس دیئے کہ مستقلی سے متعلق سمری کی منظوری وزیر اعظم نے دینے ہے عدالت نے نہیں جبکہ جسٹس ناصر الملک نے عدالتی حکم میں کہا کہ فی الحال عدالت مستقلی کے حوالے سے سماعت نہیں کرسکتی۔ عدالت نے اسلام آباد انتظامیہ کو لیڈی ہیلتھ ورکز کو ایک ہفتے میں تنخواہیں ادا کرنے کاحکم دیتے ہوئے سماعت اکتوبر کے پہلے ہفتے تک ملتوی کردی۔

مزید : ایڈیشن 1