بلوچستان میں ابر رحمت عذاب بن گئی،نالوں میں طغیانی ،7افراد پانی میں بہہ گئے

بلوچستان میں ابر رحمت عذاب بن گئی،نالوں میں طغیانی ،7افراد پانی میں بہہ گئے
بلوچستان میں ابر رحمت عذاب بن گئی،نالوں میں طغیانی ،7افراد پانی میں بہہ گئے

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

کوئٹہ(مانیٹر نگ ڈیسک) بلوچستان میں طوفانی بارشوں کے بعد سیلابی ریلوں نے تباہی مچادی جس سے قلعہ سیف اللہ اور لورالائی میں 7 افراد سیلابی ریلے میں بہہ کر جاں بحق ہوگئے۔شمال مشرقی بلوچستان میں دو روز سے جاری موسلا دھار بارش کے باعث پہاڑی ندی نالوں میں شدید طغیانی آگئی ہے۔ قلعہ سیف اللہ میں طوفانی بارشوں کے باعث پہاڑوں سے آنے والے سیلابی ریلے اپنے ساتھ 200 سے زائد گھر بھی بہا لے گئے ،4 افراد جاں بحق اور 5 زخمی ہوئے، سینکڑوں افراد کھلے آسمان تلے بے یارومددگار امداد کے منتظر ہیں۔سیلابی ریلوں کے باعث ژوب کوئٹہ قومی شاہراہ کئی مقامات سے بہہ گئی۔پنجاب اور خیبر پختونخوا سے زمینی رابطہ منقطع ہونے کی وجہ سے سیب، انگور اور خربوزے سے بھرے ٹرک بھی راستے میں پھنس گئے ۔ادھر لورالائی میں بھی شدید بارشوں کے بعد کچ عمیق ڈیم اوورفلو ہوگیا،رود جوگیزئی کے قریب سیلابی ریلوں میں بہہ کر خاتون اور دو بچے بھی جاں بحق ہوئے، سیلابی ریلوں کی وجہ سے لونی آباد ، کلی کنوبی ، کلی نیوباور اور کلی مغول سے لوگ محفوظ مقامات پر منتقل ہورہے ہیں۔

مزید : کوئٹہ